جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

حکومت کی میڈیا پالیسی کےخلاف صحافتی تنظیموں کا احتجاج

میڈیا

 اسلام آباد : حکومت کی غیر منصفانہ میڈیا پالیسی کے خلاف اسلام آباد کے ڈی چوک میں صحافتی تنظیموں نے احتجاجی مظاہرہ کیا۔

مظاہرے میں صحافتی تنظیموں کے رہنماؤں کے علاوہ سینئر صحافیوں، اینکر پرسنز، میڈیا کارکنان اور سول سوسائٹی کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔

صحافیوں کے احتجاج میں حکومت پر شدید تنقید کی گئی اور سرکاری اشتہارات میں مخصوص میڈیا ہاؤسز کو نظر انداز کرنے کی پالیسی کو مسترد کردیا گیا۔

احتجاجی مظاہرے سے خطاب دوران مقررین کا کہنا تھا کہ حکومت میڈیا کی آزادی سلب کرنے کے لیے سرکاری اشتہارات کو بطور ہتھیار استعمال کر رہی ہے۔

جرمن چانسلر اینگلا مرکل کی وزیراعظم عمران خان کو دورہ جرمنی کی دعوت

مظاہرے میں اپوزیشن جماعتوں مسلم لیگ (ن)، پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) اور عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے رہنماؤں سینیٹر فرحت اللہ بابر، سینیٹر زاہد خان، سابق وفاقی وزیر طارق فضل چوہدری اور اقلیتی رکن قومی اسمبلی کھیئل داس نے بھی شرکت کی اور صحافیوں سے یکجہتی کا اظہار کیا۔

رہنماؤں نے صحافیوں اور میڈیا ورکرز کو تنخواہوں کی عدم ادائیگی کی بھی مذمت کی۔

واضح رہے کہ پاکستان کا شمار ان ممالک میں ہوتا ہے جہاں صحافت کو درپیش مشکلات کی طویل تاریخ موجود ہے کئی عشروں قبل اخبارات سے خبریں نکال دینے کا عمل اب اخبارات کی رسائی اور چینلز کو بند کرنے کی جانب منتقل ہوچکا ہے۔

متعلقہ خبریں