جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

فیصلہ کرلیا، پنجاب اور خیبر پختونخوا اسمبلی دسمبر میں ہی تحلیل کردیں گے : عمران خان

دسمبر میں ہی

لاہور : پی ٹی آئی سربراہ کا کہنا ہے کہ پی ڈی ایم کے لوگ حالات برے دیکھ کر باہر بھاگ جائیں گے، فیصلہ کرلیا ہے پنجاب اور خیبر پختونخوا میں اسمبلی تحلیل کرنی ہے، دسمبر میں ہی تحلیل کردیں گے۔

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے پارلیمانی پارٹی کے اجلاس سے ویڈیو لنک خطاب میں کہا کہ میرے کل کے بیان سے پی ڈی ایم کو غلط فہمی ہوگئی۔ میں نے کل سمجھانے کی کوشش کی، لیکن شاید غلط پیغام چلا گیا۔ ان سے بات چیت کس چیز پر ہوگی، ہو ہی نہیں سکتی۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے فیصلہ کرلیا ہے پنجاب اور خیبر پختونخوا میں اسمبلی تحلیل کرنی ہے۔ دو اسمبلیاں تحلیل کرنے کا مقصد ملک کے 66 فیصد حصے میں الیکشن ہوگا۔ انتخابات جب بھی ہوں، پی ٹی آئی کو جیتنا ہے۔ 85 فیصد پاکستانی نئے انتخابات کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ دسمبر میں ہی صوبائی اسمبلیاں تحلیل کردیں گے۔ 66 فیصد نشستیں خالی ہوں تو ملک کو عام انتخابات کی طرف جانا ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ مفتاح اسماعیل نے کہا اسحاق ڈار ملک کو ڈیفالٹ کی طرف لے کر جارہا ہے۔ اسحاق ڈار نے کہا مفتاح اسماعیل نے کچھ نہیں کیا۔ دونوں آپس میں لڑ رہے ہیں۔ ملک کے معاشی حالات تیزی سے نیچے جارہے ہیں۔ دیوالیہ ہونے کی طرف جارہا ہے، حکومت سے سنبھالا نہیں جارہا۔

یہ بھی پڑھیں : عمران خان کو سمجھنا چاہیئے کہ دھمکیاں، بہتان اور مذاکرات اکٹھے نہیں چلتے : سعد رفیق

پی ٹی آئی رہنماء نے کہا کہ یہ پہلے ہی مشرف سے این آر او لے کر چوری معاف کراچکے ہیں۔ پرویز مشرف نے ملک کو ان دونوں پارٹیوں سے بہتر چلایا۔ مشرف کے پاس اختیار ہی نہیں تھا کہ چوری کا پیسہ معاف کردیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ان کے آنے کا مقصد اربوں کے کیسز معاف کرانا تھا۔ ان کا کوئی کارنامہ ہے تو وہ یہ ہے کہ کیسز معاف کرالیے، ہینڈلرز نے 7 ماہ ان کی مدد کی۔ جو سہولت کار ان کو لے کر آئے، کیا انہیں نہیں معلوم ملک کہاں جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم کے لوگ حالات برے دیکھ کر باہر بھاگ جائیں گے۔ اسحاق ڈار شاہد خاقان عباسی کے جہاز میں بیٹھ کر فرار ہوگئے تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف اور زرداری پاکستان کی بہتری کیلئے فیصلے نہیں کرتے۔ اپنا پیسہ بچانے کیلئے فیصلے کرتے ہیں۔ پی ڈی ایم رہنماء لوگوں میں نہیں جا سکتے، چور چور کے نعرے لگتے ہیں۔

متعلقہ خبریں