جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

خورشید شاہ کی دونوں بیگمات سپریم کورٹ طلب، کیس کل تک ملتوی

خورشید شاہ کی دونوں

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے خورشید شاہ ضمانت کا کیس کل تک ملتوی کر دیا، خورشید شاہ کی دونوں بیگمات کو طلب کر لیا گیا۔

سپریم کورٹ میں پیپلز پارٹی کے رکن قومی اسمبلی خورشید کی درخواست ضمانت بعد از گرفتاری پر سماعت ہوئی۔

دوران سماعت جسٹس سردار طارق نے استفسار کیا کہ اس کیس میں کل کتنے گواہ ہیں؟ نیب پراسیکیوٹر نے بتایا کہ کیس میں کل 144 گواہ ہیں، جن میں سے 7 گواہان کے بیانات قلمبند ہو چکے ہیں۔ 7 میں سے پانچ پر جرح بھی مکمل ہوچکی ہے۔

خورشید شاہ کے وکیل کا کہنا تھا کہ میری اطلاع کے مطابق صرف تین گواہوں پر تاحال جرح مکمل ہوئی ہے۔

عدالت نے خورشید کے بیٹے فرخ شاہ اور اہلخانہ کے وکیل فاروق ایچ نائیک کی عدالت میں عدم حاضری پر ناراضگی کا اظہار کیا۔

یہ بھی پڑھیں : بہت سے اتحاد بنتے بگڑتے پھر متحد ہو کر مضبوط دیکھے ہیں : خورشید شاہ

عدالت نے ریمارکس دیئے کہ اگر نوٹس کے باوجود فاروق نائیک عدالت نہیں آتے، تب بھی ہم کیس کو چلائیں گے۔ نیب ایک روٹین میں یہ ریفرنس چلا رہا ہے۔

جسٹس سردار طارق نے ریمارکس دیئے کہ ہارڈشپ کا نقطہ براہ راست سپریم کورٹ میں نہیں اٹھایا جا سکتا۔

خورشید شاہ کے وکیل مخدوم علی خان نے کہا کہ ہائی کورٹ میں کیس کے وقت گرفتاری کو کم عرصہ ہوا تھا۔ ستمبر میں خورشید شاہ کی گرفتاری کو دو سال مکمل ہو جائیں گے۔ مخدوم علی خان کے دلائل کل بھی جاری رہیں گے۔

سپریم کورٹ نے خورشید شاہ کی دونوں بیگمات کو طلب کر لیا ہے۔ خورشید شاہ کے بیٹے فرخ شاہ کو بھی حاضری یقینی بنانے کی ہدایت کردی گئی۔ سپریم کورٹ نے خورشید شاہ ضمانت کا کیس کل تک ملتوی کر دیا۔

سندھ کے وزیر ٹرانسپورٹ اویس قادر شاہ سمیت تمام ملزمان کو بھی پیش ہونے کا حکم دیا گیا ہے۔ عدالت نے کہا کہ جن ملزمان کو ضمانت منسوخی کے نوٹس ہوئے وہ سب کل حاضر ہوں۔

متعلقہ خبریں