جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

نور مقدم کیس؛ مرکزی ملزم ظاہر جعفر سمیت 12 ملزمان پر فردِ جرم عائد

نور

اسلام آباد: نور مقدم قتل کیس کے مرکزی ملزم ظاہر جعفر سمیت 12 ملزمان پر فردِ جرم عائد کر دی گئی ہے۔

اسلام آباد کی سیشن کورٹ میں دوران سماعت ملزم کے والد ذاکر جعفر کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ پیش کردہ شواہد کا ذاکر جعفر سے تعلق نہیں بنتا، ان شواہد پر فرد جرم عائد نہیں کی جا سکتی۔

استغاثہ کے وکیل نے کہا کہ شواہد کا جائزہ ٹرائل میں لیا جا سکتا ہے، فرد جرم عائد کی جارہی ہے، سزا نہیں سنائی جا رہی ہے۔

ملزمان کے صحت جرم سے انکار پر استغاثہ کے گواہ بیس اکتوبر کو طلب کرلیے گئے۔

یہ بھی پڑھیں: نور مقدم قتل کیس : ظاہر جعفر کے والدین کا ضمانت کے لئے سپریم کورٹ سے رجوع

ایڈیشنل سیشن جج عطا ربانی نے مرکزی ملزم ظاہر جعفر، اس کے والد ذاکر جعفر، والدہ عصمت آدم اور ملازمین افتخار، جمیل، جان محمد سمیت تھراپی ورکس سے وابستہ 6 ملزمان پر بھی فرد جرم عائد کردی۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے ٹرائل دو ماہ میں مکمل کرنے کا حکم دے رکھا ہے، فرد جرم عائد ہونے کے بعد حکم پر عمل درآمد کا آغاز ہوگیا ہے۔

متعلقہ خبریں