جی ٹی وی نیٹ ورک
دنیا

مقبوضہ کشمیر: کرفیو 202 ویں روز بھی جاری، دو کشمیری نوجوان شہید

سرینگر

سرینگر: مقبوضہ کشمیر پر مودی کی برپا قیامت 202 روز گزرنے کے بعد بھی جاری ہے، گزشتہ روز دو نوجوانوں کو شہید کرنے پر آج بھارتی فوج کیخلاف بھرپور احتجاج کیا جائے گا۔

جنگی جنون میں مبتلا بی جے پی سرکار کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت تبدیل کئے 202 روز گزر گئے، مظلوم اور بے گناہ کشمیریوں پر بھارتی فورسز کے انسانیت سوز مظالم کا سلسلہ تاحال تھم نہیں سکا، جگہ جگہ کڑے پہرے اور چوک در چوک فوجی ناکوں سے مقبوضہ وادی دنیا کی سب سے بڑی جیل میں تبدیل ہوچکی ہے۔

گزشتہ روز بھی بھارتی فوجیوں نے ضلع بھج بھیرہ میں نام نہاد سرچ آپریشن کی آڑ میں دو معصوم نوجوانوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا تھا، بھارتی فوج کے اس وحشیانہ اقدام کیخلاف مقبوضہ جموں و کشمیر کے تمام اضلاع میں عوام سڑکوں پر نکلے ہیں۔

دوسری جانب پاکستان کے دورے پر آئے برطانوی وفد نے میرپور میں آزاد و مقبوضہ کشمیر کے رہنماؤں سے ملاقاتیں کی ہیں، حریت رہنماؤں نے ڈیبی اَبراہمس کی قیادت میں آئے برطانوی وفد کو مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی فوج کے انسانیت سوز مظالم سے آگاہ کیا، کشمیری وفد میں سلیم ہارون رفیق ڈار، ساجد صدیقی اور آفتاب احمد سمیت دیگر رہنما شامل تھے۔

یہ بھی پڑھیں: مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کو دو سو ایک دن گزر گئے، شہادتوں کے اعداد و شمار جاری

گزشتہ ہفتے انتہا پسند مودی سرکار نے کشمیریوں کے حق میں آواز بلند کرنے کی پاداش میں ڈیبی اَبراہمس کو دہلی ایئر پورٹ سے واپس برطانیہ ڈی پورٹ کردیا تھا۔

پاکستان نے ڈیبی اَبراہمس و دیگر برطانوی پارلیمنٹیرینز کو آزاد کشمیر کا آزادانہ دورہ کرنے کی دعوت دی تھی، دورے کا مقصد برطانوی ایم پیز کے ذریعے کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی بھارتی خلاف ورزیاں بے نقاب کرنا ہے۔

متعلقہ خبریں