مقبوضہ کشمیر کا کرفیو اور لاک ڈاؤن چوتھے مہینے میں داخل

چوتھے مہینے مقبوضہ کشمیر

سری نگر : مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو اور لاک ڈاؤن چوتھے مہینے میں داخل ہوگیا ہے۔ قابض بھارتی حکمرانوں نے ساڑھے چار سو کشمیری صحافیوں، وکلاء اور تاجروں پر وادی سے باہر جانے پر پابندی لگادی۔

مقبوضہ کشمیر میں کرفیو چوتھے مہینے میں داخل ہوگیا۔ وادی میں انٹرنیٹ، موبائل سروس، تعلیمی ادارے، کاروباری مراکز اور دکانیں بدستور بند ہیں۔

کشمیری نوجوان، بچے، بزرگ اور خواتین اپنے لہو سے آزادی کی جدوجہد آگے بڑھا رہے ہیں۔ بھارتی فورسز نے گھر گھر تلاشی کے دوران متعدد کشمیری نوجوانوں کو گرفتار کرلیا ہے۔

کاروباری مراکز کی مسلسل بندش نے کشمیریوں کے روزگار تباہ کردئیے۔ مختلف علاقوں کے محاصرے اور چھاپوں کے دوران متعدد کشمیری نوجوانوں کو گرفتار اور خواتین کی عصمت دری کی جارہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : مقبوضہ کشمیر : بھارتی مظالم کے انسانیت سوز سلسلے کو تین ماہ مکمل

قابض بھارتی حکمرانوں نے ساڑھے چار سو افراد کے کشمیر سے باہر جانے پر پابندی عائد کردی ہے، ان میں صحافی، وکلاء اور تاجر شامل ہیں۔