جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

لمپی اسکن سے متاثرہ جانور کا گوشت اور دودھ قابل استعمال ہے : ڈی جی لائیو اسٹاک کے پی

گوشت اور دودھ قابل

پشاور : ڈاکٹر عالمزیب کا کہنا ہے کہ جانوروں کی نقل و حرکت پر نظر ہے، لمپی اسکن سے متاثرہ جانور سے وائرس انسانوں میں منتقل نہیں ہوتا۔

خیبر پختونخوا کے ڈی جی لائیو اسٹاک ڈاکٹر عالمزیب نے بتایا ہے کہ صوبے مین لمپی اسکن کے پانچ ہزار 341 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔ پہلا کیس رواں سال کے اپریل میں ڈیرہ اسماعیل خان سے سامنے آیا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ ترکی سے درآمد کی گئی ویکسین کے 50 ہزار ٹیکے جانوروں کو لگوائیں جاچکے ہیں۔ بچاؤ کے لیے پروونشل ٹاسک فورس اور ڈیزیز رپورٹنگ نظام متعارف کرایا گیا۔

یہ بھی پڑھیں : لمپی اسکن وائرس : سندھ کے بعد پنجاب میں بھی پھیل گیا

ان کا کہنا تھا کہ بین الاضلاعی اور بین الصوبائی سرحدوں پر 56 چیک پوسٹیں قائم کی گئی ہیں، جہاں جانوروں کی نقل و حرکت پر نظر رکھ جا رہی ہے۔

ڈاکٹر عالمزیب نے کہا کہ مرض سے مویشیوں میں شرح اموات کا تخمینہ ایک سے پانچ فیصد تک لگایا گیا ہے۔ لمپی اسکن انسانی صحت کے لئے نقصان دہ ہے نہ یہ جانوروں سے انسانوں کو منتقل ہوتی ہے۔

ڈی جی لائیو اسٹاک کا کہنا تھا کہ متاثرہ جانور کا گوشت اور دودھ انسانوں کے لیے قابل استعمال ہے۔ بیماری مویشیوں میں دودھ کی پیداواری صلاحیت اور کھال بری طرح متاثر کرتی ہے۔

متعلقہ خبریں