جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

میڈیکل بورڈ سے نواز شریف کے ٹیسٹ سے متعلق مزید وضاحت طلب

میڈیکل بورڈ

لاہور : ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا ہے کہ میڈیکل بورڈ سے نواز شریف کے ٹیسٹ سے متعلق مزید وضاحت طلب کی ہے، جس میں پوچھا گیا ہے کہ کون سے ٹیسٹ پاکستان میں نہیں ہوسکتے ہیں۔

صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ نواز شریف کی صحت سے متعلق کہانیاں اور چہ مگویاں چل رہی تھیں۔

انہوں نے کہا کہ جب وہ آئے تو پلیٹ لیٹس کی تعداد بہت کم تھی، آتے ساتھ انہیں پلیٹ لیٹس دئیے اور پھر کراچی سے ڈاکٹر طاہر شمسی کو بلایا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ سابق وزیر اعظم کی شوگر کنٹرول نہیں ہو پا رہی تھی، اسٹیرائیڈ جب دی جاتی ہے تو شوگر کی مقدار بڑھ جاتی ہے، جس سے انسولین کی ڈوز بھی بڑھانی پڑی۔

یہ بھی پڑھیں : نواز شریف کی جان کے لئے خطرات مزید بڑھ رہے ہیں : مریم اورنگزیب

ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ انہوں نے بیل کیلئے اپلائی کیا اور ڈاکٹرز کو بلایا گیا اور بیل ملی، منسٹری آف انٹیرئیر نے ہمیں خط لکھا کہ بورڈ سے مشورہ لیں کہ بورڈ کیا کہتا ہے۔ کل رات بورڈ کی میٹنگ ہوئی۔ بورڈ نے مشورہ دیا ان کی طبعیت بہتر نہیں ہو رہی انہیں باہر بھیجا جائے۔

صوبائی وزیر صحت نے کہا کہ ہم نے میڈیکل بورڈ سے پوچھا ہے کہ ان ٹیسٹوں کے بارے میں بتایا جائے جو پاکستان میں نہیں۔ کونسے ٹیسٹ ہیں جو کرنے چاہئیے اور پاکستان سے باہر بھیجے جا سکتے ہیں۔

انہوں نے بورڈ پر کسی قسم کا سیاسی پریشر کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ بورڈ خودمختار ہے، ہم نے بورڈ پر کوئی دباؤ نہیں ڈالا۔ نواز شریف ایک ہائی پروفائل مریض ہیں، ان کی بیماری کے بارے میں شک نہیں کیا جا سکتا.

متعلقہ خبریں