جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

کے سی آر کے نام پر اہل کراچی، عدلیہ اور ریلوے کے ساتھ غلط بیانی کی گئی : خواجہ سعد رفیق

کے سی آر کے نام پر

لاہور : خواجہ سعد رفیق کا کہنا ہے کہ کراچی میٹرو کی تعمیر واحد حل ہے، کے سی آر کے نام پر اہل کراچی، عدلیہ اور ریلوے کے ساتھ غلط بیانی کی گئی۔

مسلم لیگ (ن) کے رہنماء اور سابق وفاقی وزیر برائے ریلوے خواجہ سعد رفیق نے سماجی میڈیا پر اپنی ٹوئٹ میں کہا ہے کہ پاکستان ریلوے کے پاس میٹرو ٹرین چلانے کی صلاحیت اور وسائل نہیں ہے۔ کے سی آر کی تعمیر کی ٹیکنالوجی نیشنل ریلوے سے مختلف ہے۔

انہوں نے کہا کہ کے سی آر کے لیے الگ خود مختار اتھارٹی بنانا ہوگی۔ ن لیگ نے اپنے دور میں کے سی آر کو سی پیک میں شامل کروایا۔ موجودہ حکومت نے کے سی آر پر کوئی پیش رفت نہیں کی۔ پرانی پٹڑی پر دن میں 4 ٹرینیں چلانے سے ہر ماہ کروڑوں روپے کا نقصان ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں : وزیر ریلوے شیخ رشید نے کراچی سرکلر ریلوے کا افتتاح کر دیا

ان کا کہنا تھا کہ تیز رفتاری کے دور میں شہری 3 گھنٹے ٹرین کا انتظار کیوں کریں؟ پاکستان ریلوے کے انجن اور پرانی کوچز سرکلر ریلوے کیلئے مناسب نہیں۔ اورنج لائن کی مانند کراچی میٹرو کی تعمیر واحد حل ہے۔ ایم ایل ون پراجیکٹ کی ڈیزائننگ کے بعد جائیکا کے پرانے نقشے متروک ہو چکے۔

خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ ایک ہی روٹ پر ایم ایل ون اور کے سی آر کیلئے نئی منصوبہ بندی کی ضرورت تھی۔ ایم ایل ون شروع ہوتے ہی یہ سب کچھ اکھاڑنا پڑے گا۔ کے سی آر کے نام پر اہل کراچی، عدلیہ اور ریلوے کے ساتھ غلط بیانی کی گئی۔ وزارت ریلوے نے عدالت میں کے سی آر کا مقدمہ غلط طور پر پیش کیا گیا۔

لیگی رہنماء نے کہا کہ کے سی آر خسارہ بڑھائے گی، ریلوے کا کروڑوں روپیہ برباد کیا گیا۔ کے سی آر کا مطلب نئی میٹرو ٹرین ہے جو سی پیک کا حصہ ہے۔

متعلقہ خبریں