جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

مودی حکومت کا اپنی ہی ائیر فورس کو 45 کروڑ کا ٹیکا، ناکارہ تیجا جہاز درد سر بن گیا

تیجا جہاز

اسلام آباد : مودی حکومت نے اپنی ہی ائیر فورس کو 45,696 کروڑ کا ٹیکا لگا دیا، اداروں کو ناکارہ تیجا جہاز لینے پر مجبور کیا گیا۔

بی جے پی کے وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے ہندوستانی کمپنی ہندوستان ایروناٹکس لمیٹڈ کو 6.25 بلین ڈالر ٹھیکے سے نوازا اور تیجا جہاز لینے پر مجبور کیا۔ ہندوستانی نیوی پہلے دن ہی ان جہازوں کو ان کی تکنیکی مسائل کہ وجہ سے مسترد کر چکی تھی۔

تیجا جہاز ہندوستانی مگ ٹوئنٹی ون (MIG-21) جہازوں کے نعم البدال کے طور پر متعارف کرائے جا رہے ہیں، کیونکہ 1970ء کے بعد سے مگ ٹوئنٹی ون (MIG-21) کے حادثات میں 170 سے زیادہ پائلٹ اور 40 عام شہری ہلاک ہو چکے ہیں۔

بھارتی ایوی ایشن سسٹم انڈسٹری اپنی غیر معیاری پیداوار اور دہایوں پر محیط اپنی مسلسل ناکامیوں اور نا اہلیوں کی وجہ سے پوری دنیا میں بد نام ہے۔

یہ بھی پڑھیں : چین اور بھارت کے درمیان معاہدہ طے، لداخ میں فوجیں پیچھے ہٹانا شروع

اس امر کا اندازہ اسی بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ دنیا میں خود کو چین کا متبادل اور مقابل متعارف کروانے والا ملک 26 سال میں اپنے تیار کردہ جہاز کی کینوپی کا فالٹ تک درست نہ کر پایا۔

مگ ٹوئنٹی ون (MIG-21) کے فرسودہ بیڑے کی جگہ تیجا جہازوں کو متعارف کرایا گیا، لیکن اب تک 60 فیصد تیجا گراؤنڈ ہو چکے ہیں۔ مودی حکومت اور بھارتی ائیر فورس کا 27 فروری کو تیجا جہاز استعمال نہ کرنا، اس پروجیکٹ کی ناکامی کا عکاس ہے۔

اس کے مقابلے میں پاکستان کے شاہینوں نے پاکستان میں بنائے جانے والے جے ایف تھنڈر سے ستائس فروری کو بھارتی سور ماؤں کا خواب چکنا چور کیا اور ایک سو تھرٹی اور مگ ٹوئنٹی ون (MIG-21) کو نشانہ بنایا۔

پاکستان کی یہ کامیابی جہاں پاکستان ایوی ایشن انڈسٹری کی مہارت اور پیشہ وارانہ کارکردگی کا ثبوت ہے، وہیں بھارتی ایوی ایشن انڈسٹری پر ایک سوالیہ نشان بھی ہے۔

متعلقہ خبریں