جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

مون سون بارشوں نے بلوچستان میں تباہی مچادی، دو افراد ڈوب کر ہلاک ہوگئے

مون سون

کوئٹہ: مون سون بارشوں کا چوتھا اسپیل بلوچستان میں تباہی مچا رہا ہے۔ سبی، زیارت، خضدار، اوتھل، دالبندین، کوہل، چاغی، جھل مگسی، دکی اور لسبیلہ میں صورت حال خراب ہے۔ محکمہ ایری گیشن کے مطابق پچیس ہزارکیوسک کاریلا گزر رہا ہے۔

خضدار اور گردونواح میں گرج و چمک کے ساتھ موسلادھاربارش سے ندی نالوں میں طغیانی آگئی، گوادرسے رتو دیر و قومی شاہراہ ٹریفک کے لیے بند کردی گئی۔ مولاچٹوک میں کپاس کی فصلوں میں نقصان پہنچا، ایم ایٹ و نگواہل کے مقام پر لینڈ سلائڈینگ کی وجہ سے ٹریفک کے لیے بند ہوگئی۔

لسبیلہ کے پہاڑی سلسلے کنراج، دریجی اور شاہ نورانی میں شدید بارشوں کے بعد اوتھل، حب، وندر اور بیلہ کے برساتی ندی نالوں میں طغیانی کی اطلاعات ہیں۔

ڈیرہ بگٹی میں بارش کے پانی میں ڈوب کردو نوجوان جاں بحق ہوگئے، حادثہ کھیتوں کے حفاظتی بند ٹوٹنے کے باعث پیش آیا۔

کوہلو شہر اور گردونواح میں موسلادھار بارش سے سوناری پل بہہ گیا، لیویزر سال دار میجر ارشد کے مطابق لیویز کی امدادی ٹیمیں روانہ کردی گئی ہیں سبی کوہلو شاہراہ ہر قسم کے ٹریفک کے لیے بند ہے۔

سنجاوی میں صبح سے بارش کا سلسلہ جاری ہے، بارش کی وجہ سے نشیبی علاقے زیر آب آگئے۔

جھل مگسی بلوچستان میں طوفانی بارشوں کے باعث برساتی نالوں میں طغیانی آگئی، دریائے مولا میں اونچے درجے کا سیلاب ہے، دو دن سے لگاتار بارش سے گھروں میں پانی بھر گیا۔

سبی ڈویژن کے اضلاع سبی، ہرنائی میں طوفانی ہواؤں کے ساتھ بارش کاسلسلہ دوسرے روز بھی جاری ہے۔ گردونواح کے علاقوں میں طوفانی ہوائیں چلنے سے بجلی کے پول گرگئے۔

تلی، کڑک، چانڈیو، سلطان کوٹ مل سمیت نشیبی علاقے زیرآب آگئے، ندی نالوں میں طغیانی کا خدشہ ہے۔ ہرنائی اور سبی میں بارشوں کے باعث دریائے ناڑی میں نچلے درجے کا سیلابی ریلا گزر رہا ہے۔

متعلقہ خبریں