جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

این اے 249 : ریٹرننگ افسر اور ڈی آر او فریق بن گئے، الیکشن متنازعہ بن چکا ہے : شاہد خاقان

ڈی آر او فریق

کراچی : شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ ریٹرننگ افسر اور ڈی آر او فریق بن چکے ہیں، اب یہ الیکشن متنازعہ بن چکا ہے۔

مسلم لیگ ن کے سینیئر نائب صدر اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ این اے 249 کا الیکشن میڈیا میں خبروں کی زینت بنا ہوا ہے۔

جیتنے والی پارٹی سب سے زیادہ وضاحتیں دے رہی ہے۔ پورا الیکشن کمیشن ایک الیکشن پر لگا ہوا تھا۔ پھر بھی ووٹ کی حفاظت نہیں کرسکا۔

انہوں نے کہا کہ کوئی پولنگ اسٹیشن ایسا نہیں تھا، جہاں 8 بجے کے بعد بھی گنتی ہورہی تھی۔ ہمارے علم میں آیا 34 پولنگ اسٹیشنز کے رزلٹ ریٹرننگ افسر کے پاس نہیں آئے۔

یہ بھی پڑھیں : مسلم لیگ (ن) کا بشیر میمن کے انکشافات بھرپور طریقے سے اٹھانے کا فیصلہ

ان کا کہنا تھا کہ الیکشن کے دن ہم پولنگ افسر سجاد خٹک کے پاس گئے۔ پولنگ افسر سے کہا رات کے 2 بج گئے ابھی تک نتیجہ نہیں آیا۔ ہم نے آر او سے پوچھا کہ آپ کے پاس فارم 45 کس وقت آئے؟ گیارہ بجے تک فارم 45 آر او آفس نہیں پہنچے تھے۔

کوئی بھی پولنگ اسٹیشن آدھے گھنٹے دور نہیں تھا، لیکن رزلٹ نہیں پہنچا۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ریٹرننگ افسر اور ڈی آر او فریق بن چکے ہیں۔ الیکشن شفاف نہ رکھا جائے تو سوال کھڑے ہوتے ہیں۔ اب یہ الیکشن متنازعہ بن چکا ہے۔ سجاد خٹک، ندیم حیدر، عبدالرحمان نے پہلے سے فیصلہ لکھ کر رکھا ہوا تھا۔ ریٹرننگ افسر کہتے ہیں کہ ووٹ کی دوبارہ گنتی نہیں کرائیں گے۔

لیگی نائب صدر کا مزید کہنا تھا کہ ہماری درخواست پر الیکشن کمیشن نے کارروائی روک دی ہے۔ الیکشن کمیشن کے افسران بے بس ہیں۔

متعلقہ خبریں