نیب نے پارک لین کیس میں بھی آصف زرداری کی گرفتاری ظاہر کردی

اسلام آباد: نیب نے آصف علی زرداری کی پارک لین کیس میں بھی باقاعدہ گرفتاری ڈال دی۔ قومی احتساب بیورو نے سابق صدر کا پارک لین کیس میں جسمانی ریمانڈ لینے کا فیصلہ کرلیا۔

جعلی اکاؤنٹس کیس میں گرفتار سابق صدر آصف زرداری کو نیب راولپنڈی کی جانب سے پارک لین کیس میں بھی گرفتاری ظاہری کردی ہے۔ نیب احتساب عدالت سے پارک لین کیس میں آصف زرداری کا جسمانی ریمانڈ بھی حاصل کرے گی۔

خیال رہے آصف زرداری میگامنی لانڈرنگ کے کیسز میں پہلے ہی سے جسمانی ریمانڈ پر ہیں اور ان سے مختلف معاملات پر تفتیش جاری ہے۔ جبکہ بلاول زرداری بھی پارک لین کیس میں ملزم ہیں، ان سے بھی پوچھ گچھ ہوچکی ہے۔

پارک لین کمپنی کے ذریعے جعلی دستاویزات پر قرضے حاصل کئے گئے، جبکہ اس کیس میں دو کمپنیوں کے افسران پہلے ہی گرفتار کئے جا چکے ہیں۔

یاد رہے پارک لین کیس میں اربوں روپےکی ترسیلات جعلی بینک اکاؤنٹس سے کی گئیں، آصف زرداری پر پارک لین کمپنی میں 1989 میں فرنٹ مین کے ذریعے خریداری کا الزام ہے۔

2009 میں آصف زرداری اور بلاول بھٹو کمپنی کے 25، 25 فیصد کے شیئرہولڈر بنے، آصف زرداری بطور کمپنی ڈائریکٹر اکاؤنٹس استعمال کرنے کا اختیار رکھتے تھے، جبکہ 2008 میں کمپنی کے دستاویز پر آصف زرداری کے بطور ڈائریکٹر دستخط موجود ہیں۔ پارک لین کمپنی نے قرضوں کی مد بھی بینکوں سے اربوں روپے لیے۔