جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

نواز شریف اسلام آباد کی احتساب عدالت سے سزا یافتہ ہیں، حکم نامہ جاری

اشتہاری

اسلام آباد: ہائیکورٹ نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی العزیزیہ ریفرنس میں سزا کیخلاف اپیل میں متفرق درخواستوں پر تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ہے۔ عدالت نے قرار دیا ہے کہ قانون کے تحت جب ایک شخص عدالت سے اشتہاری قرار دے دیا جائے تو وہ اپیل کا حق کھو دیتا ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی متفرق درخواستوں پر تحریری حکمنامہ جاری کردیا ہے۔ 5 صفحات پر مشتمل حکم نامہ جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی نے تحریر کیا ہے۔

حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف کے وکیل کے مطابق نواز شریف کی طبیعت ان کو سفر کی اجازت نہیں دیتی۔

وکیل نے نواز شریف کے معالج ڈاکٹر ڈیوڈ لارنس کی رپورٹ عدالت میں پیش کیں، نواز شریف کی عدم حاضری پر ان کی اپیل خارج کی جاتی ہے۔ حکم نامے کے مطابق نواز شریف اسلام آباد کی احتساب عدالت سے سزا یافتہ ہیں۔

9 ستمبر کو اسلام آباد کی احتساب عدالت نے نواز شریف کو اشتہاری قرار دیا، قانون کے تحت جب ایک شخص عدالت سے اشتہاری قرار دے دیا جائے تو وہ اپیل کا حق کھو دیتا ہے۔

اپیل کی سماعت کیلئے ملزم کا عدالت میں پیش ہونا لازمی ہے۔ نواز شریف کی حاضری سے استثنی کی درخواست نمٹائی جاتی ہے۔ نواز شریف کی سزا کے خلاف اپیل پر میرٹ پر فیصلہ ہوگا۔

نواز شریف کی اپیلوں پر سماعت سے قبل نواز شریف کی حاضری یقینی بنانے کی کاروائی ہوگی۔ نواز شریف کی عدم حاضری پر ان کے 22 ستمبر کیلئے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے جاتے ہیں۔

وفاقی حکومت برطانیہ میں پاکستانی ہائی کمیشن کے ذریعے عدالتی حکم پر عملدرآمد کرائے۔

متعلقہ خبریں