جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

کراچی واقعہ پر تحقیقات کی ضرورت نہیں، انکوائری رپورٹ عوام کے سامنے لائی جانی چاہیے : مریم نواز

کراچی واقعہ پر

لاہور : مریم نواز نے کہا ہے کہ کراچی واقعہ پر تحقیقات کی ضرورت نہیں، سب کچھ واضح ہے، انکوائری رپورٹ عوام کے سامنے لائی جانی چاہیے۔

مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے مال روڈ پر بلوچ طلبہ سے ملاقات کی۔ اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ ڈی جی خان، بلوچستان راجن پور اور فاٹا کی طلبہ سڑکوں پر ہیں۔ ان کی چھ سو سیٹیں واپس لے لی گئیں۔ کہا گیا پنجاب بڑا بھائی ہے، میری نظر میں بلوچستان بڑا بھائی ہے۔ بلوچ طلبہ کی اسکالر شپ بحال کی جائے۔ طلبہ سے اظہار یکجہتی کے لئے آئی ہوں۔

انہوں نے کہا کہ بلوچستان کے طلبہ پاکستان کا مستقبل ہیں۔ بلوچ طلبہ کو کوئی میڈیا کوریج نہیں دی گئی۔ بلوچ طلبہ بارہ روز سے سڑکوں پر رل رہے ہیں۔ شہبازشریف نے بلوچ طلبہ کو اسکالر شپ اور پنجاب کی یونیورسٹیوں میں داخلہ دیا۔ ایسی کیا آفت آ گئی کہ بلوچ طلبہ کی اسکالر شپ واپس لینے کی نوبت آ گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ اللہ کا واسطہ آپ جعلی ہی سہی لیکن وزیر اعظم کی کرسی پر تو بیٹھے ہوئے ہو، کسی کو اتنی سی توفیق نہیں ہوئی کہ طلبہ سے آکر پوچھ لیں۔ افسوس ہے طلبہ اپنے تعلیمی حقوق کےلئے سڑکوں پر سراپا احتجاج ہیں۔

مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر نے کہا کہ شہباز شریف نے دل سے پنجاب کی خدمت کی۔ نواز شریف کے بغیر پاکستان، شہباز شریف کے بغیر پنجاب لا وارث ہے۔ بھائی سے بھائی کو لڑانے کی سازش کی گئی، کرپشن پر نہیں بھائی کا ساتھ دینے پر شہباز شریف کو جیل بھیجا گیا۔

یہ بھی پڑھیں : کراچی واقعے پر وفاق بری الذمہ نہیں ہوسکتا : مولانا فضل الرحمان

مریم نواز کا کہنا تھا کہ جتنے کیسز بنانے ہیں بنالو اپنے منہ پر ہی کالک مل لو گے۔ نواز شریف مخالفین کے سروں پر سوار ہیں۔ کراچی واقعہ نے ثابت کر دیا کہ ریاست پر ریاست کیا ہوتی ہے۔ روز روشن کی طرح ہر چیز عیاں ہے ایک ایک چیز سی سی ٹی وی فوٹیج میں موجود ہے۔ ذاتی خیال ہے کراچی واقعہ پر تحقیقات کی ضرورت نہیں۔

انہوں نے کہا کہ تحقیقات سب کے سامنے ہو تاکہ عوام کو پتہ چلے تیس دن بعد تحقیقات کو چھپایا نہ جائے۔ کراچی واقعہ کی انکوائری رپورٹ عوام کے سامنے لائی جانی چاہیے۔ کراچی واقعہ پر مجھے بلایا گیا تو میں کراچی جاؤں گی۔ چادر چار دیواری کا تقدس پامال کرکے خاتون کے کمرے پر دھاوا بولا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف نے کہا عمران خان ہمارا ہدف نہیں، نواز شریف نے کہا بڑوں کی لڑائی میں بچوں کا کام نہیں، کراچی واقعہ نے ثابت کر دیا یہ بڑوں کی لڑائی ہے،

جلد یا دیر سے آپ کو قانون کا سامنا کرنا پڑے گا۔ حکومت بنی گالہ میں چھپ کر بیٹھی ہے جنوری سے پہلے حکومت گھر چلی جائے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ مریم نواز نہیں قوم کی بیٹی اور بہن ہوں اگر میں محفوظ نہیں تو کوئی بیٹی بھی محفوظ نہیں رہے گی۔ حکومتی مشینری اور وزراء اپنی خفت مٹانے کے لئے بیانات دے رہے ہیں۔ کراچی واقعہ جعلی حکومت پر بھی حملہ ہے، حکومت والے تو چھپے بیٹھے رہے۔ جب کراچی میں حملہ ہوا تو معلوم تھا کہ پیپلز پارٹی واقعہ میں ملوث نہیں۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی کے سیاسی حریف ہیں دشمن نہیں ہو سکتے ہیں۔ بلاول نے واقعہ پر مجھے فون کیا، وہ مجھ سے زیادہ غصے میں تھے۔ تحقیقاتی رپورٹ کا انتظار کررہی ہوں بلاول نے جو بیان دیا اچھی بات ہے۔ جنہوں نے کراچی واقعہ کیا انہیں اس پر شرمندگی ہونی چاہئیے۔

متعلقہ خبریں