جی ٹی وی نیٹ ورک
دنیا

مقبوضہ کشمیر : کرفیو اور لاک ڈاؤن کو ایک سو پچیانوے روز گزر گئے

مقبوضہ کشمیر ایک سو پچیانوے

سرینگر : مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اور لاک ڈاؤن کو ایک سو پچیانوے دن گزر گئے۔ کشمیر میڈیا سیل کے ریسرچ سیکشن نے بھارت کی جانب سے فالس فلیگ آپریشن کا خدشہ ظاہر کردیا۔

مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اور لاک ڈاؤن مسلسل چھ ماہ سے زائد عرصے سے جاری ہے۔ وادی میں سخت بحرانی کیفیت ہے مگر بھارتی میڈیا سب اچھا ہے کا راگ الاپ رہا ہے۔

کشمیر میڈیا سروس نے دعویٰ کیا ہے کہ بھارتی انتظامیہ مقبوضہ کشمیر میں ایک اور فالس فلیگ آپریشن کی منصوبہ بندی کررہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : کشمیر کے حق میں آواز اٹھانے پر ترک صدر کا شکریہ ادا کرتا ہوں: وزیر اعظم

روز بہ روز بڑھتی پابندیوں سے کشمیر کےعوام عذاب میں ہیں۔ ایک سو پچیانوے دنوں سے نہ بچے تعلیم حاصل کرسکتے ہیں اور نہ کوئی کاروبار کرسکتا ہے۔ انٹرنیٹ سروس، ٹیلی وژن معلومات سے رسائی کا ہر راستہ بند ہے۔

گزشتہ روز پلوامہ حملے کا ایک سال مکمل ہونے پر بڑی تعداد میں بھارتی فوج جگہ جگہ تعینات رہے، کرفیو کو مزید سخت کردیا۔ ہر گلی کوچے میں درجن بھر فوج اہل کار تعینات رہے۔ کشمیری عوام پر گھر سے نکلنے پر بھی پابندی عائد کردی گئی تھی۔

کانگریس رہ نما راہول گاندھی نے مودی سرکار کو نشانہ پر رکھ لیا۔ اپنے بیان میں کہا کہ اب تک مودی حملے کا ذمہ دار سامنے نہ لاسکے۔ مودی سرکار بتائے حملے کا فائدہ اس نے الیکشن میں جیت کے لیے اٹھایا یا نہیں۔

متعلقہ خبریں