جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

اپوزیشن کی اے پی سی تنازعات کا شکار، مولانا فضل الرحمن ناراض ہوگئے

تنازعات

اسلام آباد: اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرنس تنازعات کا شکار ہوگئی، اپوزیشن جماعتوں کے قائدین کا ایک دوسرے پر اعتماد بحال نہ ہوسکا۔

اے پی سی میں بھی اپوزیشن جماعتوں کے قائدین کا اعتماد بحال نہ ہوسکا، اپوزیشن رہنما تحریک عدم اعتماد اور ان ہاؤس تبدیلی پر تقسیم ہوگئے۔ پیپلزپارٹی اور جے یو آئی ف نے اسپیکر قومی اسمبلی کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانے کی مخالف کردی۔

 مسلم لیگ ن اور دیگر پارلیمانی جماعتوں کی جانب سے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کے خلاف عدم اعتماد کی قرار داد لانے پر زور دیا۔

مولانا فضل الرحمان نے اپنے خطاب میں اسمبلیوں سے استعفا اور سندھ اسمبلی تحلیل کرنے کی تجویز دے دی۔

مولانا فضل الرحمان نے آل پارٹیز کانفرنس میں پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا جس کو دیکھتے ہوئے سینیٹر شیری رحمان اور مریم نواز کی مداخلت پر سوشل میڈیا لنک ڈاون کردیا گیا جس پر مولانا ناراض ہوگئے۔

مولانا فضل الرحمان کی تنقید پر بلاول بھٹو زرداری نے مولانا کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ مولانا صاحب یہ ان کیمرہ سیشن ہے، آپ کی تقریر براہ راست سوشل میڈیا پر چل رہا ہے جس کے بعد مولانا فضل الرحمان کی لہجے میں نرمی آگئی۔

متعلقہ خبریں