جی ٹی وی نیٹ ورک
کھیل

ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ 2009 کی جیت کا یادگار دن ، پاکستانی کرکٹرز کا اظہار خیال

ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ 2009

آج ہی کا دن تھا کہ جب 2009 میں پاکستان نے سری لنکا کو ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے فائنل میں شکست دی تھی۔ اس یادگار دن پر اس وننگ ٹیم کے کپتان یونس خان سمیت دیگر کھلاڑیوں نے اپنے جذبات کا اظہار کیا ہے۔

سابق کپتان یونس خان نے اپنے بیان میں کہاکہ ہم بحثیت ٹیم ہر قربانی دینے کے لیے تیار تھے ،ہم ہر چیلنج کے لیے تیار تھے اسی لیے اللہ نے ہمارا ساتھ دیا ،ہمیں خود پر یقین تھا کہ ہم ورلڈ کپ جیت کر پاکستان جائیں گے ۔

مشہور آل راونڈ ر شاہد آفریدی نے اپنے بیان میں کہا کہ نیوزی لینڈ کے خلاف عمر گل نے غیر معمولی اسپیل کیا ، یہ میچ اہم تھا ، میں نے پرفارم کیا ، ایک اچھا کیچ لیا ، اس کے بعد ٹیم اکٹھی ہو گئی ،سیمی فائنل میں ساوتھ افریقہ کے خلاف میں مین آف دی میچ رہا تھا۔

سابق فاسٹ بالر سہیل تنویر نے اس موقع پر کہا کہ ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ 2009 کی جیت کے سفر کا آغاز 2007 کے ورلڈ کپ سے ہوا تھا ، 2007 میں ہم بدقسمتی سے فائنل نہیں جیت سکے تھے۔

اس ٹیم کے وکٹ کیپر کامران اکمل نے کہا کہ ہمارا آغاز اچھا نہیں تھا ، پرفارمنس نہیں ہو رہی تھی لیکن ٹیم نے کم بیک کیا ۔

فاسٹ بالر عمر گل نے کہا کہ ہالینڈ کے خلاف ہمارا میچ بڑا اہم تھا وہ ہم نے اچھے رن ریٹ سے جیتا، نیوزی لینڈ کے خلاف جو ریکارڈ بنایا ، وہ پرفارمنس مجھے یاد رہے گی۔

عبدالرزاق نے اپنے بیان میں کہا کہ پہلے دو میچز ہم اچھا نہیں کھیلے تھے ، مجھے ایونٹ اب تک یاد ہے ،مجھے کال کیا گیا اور میں ٹیم کا حصہ بنا۔

مصباح الحق نے کہا کہ عبدالرزاق کا ایک اچھے وقت پر ٹیم میں آنا شاندار رہا ، شاہد آفریدی کا بروقت کھیلنے کا فائدہ ہوا ،کپتان یونس خان نے مجھے فائنل میں فنش کرنے کے لیے کہا ، لیکن باری نہیں آئی۔

شعیب ملک نے کہا کہ بولنگ اور بیٹنگ میں پرفارمنسز بہت غیر معمولی رہیں ، بیٹنگ کے دوران شاہد آفریدی مجھے بس یہی کہتے تھے کہ مجھے سمجھاتے رہنا ۔

یہ پڑھیں :  بابر اعظم نے خوش دل شاہ کومزید خوش کردیا

متعلقہ خبریں