جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

نیب ترمیمی آرڈیننس کے خلاف درخواست، اٹارنی جنرل معاونت کے لیے طلب

نیب ترمیمی آرڈیننس

لاہور : عدالت نے نیب ترمیمی آرڈیننس کے خلاف درخواست پر نیب کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 9 نومبر کو جواب طلب کر لیا۔

لاہور ہائی کورٹ میں نیب ترمیمی آرڈیننس 2021 کے خلاف وکیل اشتیاق چوہدری کی درخواست پر سماعت ہوئی۔

درخواست میں رجسٹرار آفس کے آرڈیننس کی کاپی ساتھ لگانے کے اعتراض کو ختم کر دیا گیا تھا۔ آرڈیننس کی کاپی درخواست کے ساتھ لگا کر درخواست دوبارہ دائر کی گی تھی۔

درخواست گزار نے مؤقف اختیار کیا کہ نیب ترمیمی آرڈیننس 2021 اعلیٰ عدلیہ کے فیصلوں کے خلاف ہے۔ پارلیمنٹ کی موجودگی آرڈیننس جاری نہیں کیا جاسکتا۔ قانون کے مطابق چیئرمین نیب کی مدت میں توسیع نہیں ہوسکتی۔ نیب آرڈیننس 2021 غیر قانونی غیر آئینی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : چیئرمین نیب سے متعلق مشاورت کا کوئی عمل شروع نہیں ہوسکا : شاہد خاقان عباسی

درخواست کے مطابق قانون سازی کا اختیار پارلیمنٹ کا ہے، کسی ایک فرد کے لیے آرڈنینس جاری نہیں کیا۔ پٹیشن کے حتمی فیصلے تک نیب ترمِیمی آرڈیننس پر عمل درآمد روکا جائے۔ عدالت نیب آرڈیننس 2021 کو کالعدم قرار دے۔

عدالت نے درخواست پر نیب کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 9 نومبر کو جواب اور اٹارنی جنرل آف پاکستان کو معاونت کے لیے طلب کر لیا۔

متعلقہ خبریں