جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

پارلیمنٹ میں مقدس کلمات کی بے حرمتی پر مقدمے کے اندراج کے لیئے درخواست دائر

پارلیمنٹ میں مقدس

اسلام آباد : پارلیمنٹ میں ہنگامی آرائی کے دوران مقدس کلمات کی بے حرمتی پر مقدمے کے اندراج کے لیئے درخواست دائر کردی گئی۔

پارلیمنٹ میں ہنگامی آرائی کے دوران اراکین اسمبلی کے ایک دوسرے پر بجٹ کتابیں مارنے اور مقدس کلمات کی بے حرمتی پر مقدمے کے اندراج کے لیئے درخواست دائر کردی گئی ہے۔

اندراج مقدمہ کے لیے درخواست طارق اسد ایڈووکیٹ نے تھانہ سیکریٹریٹ میں دائر کی۔ درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا کہ قومی اسمبلی بجٹ سیشن میں اپوزیشن لیڈر کی تقریر کے دوران ہنگامہ آرائی ہوئی۔ دوران ہنگامہ آرائی پی ٹی آئی کے علی نواز اعوان، ن لیگ کے روحیل اصغر سمیت دیگر اراکین اسمبلی نے بجٹ کتابیں ماریں۔

یہ بھی پڑھیں : ارکان شائستگی سے بات کریں، پارلیمنٹ کا تقدس پامال نہ کریں : اسد قیصر

درخواست گزار کے مطابق بجٹ کتابوں کے صفحہ اول پر درود شریف، بسم اللہ اور صفحہ آخر پر رسول اللہ ﷺ جیسے مقدس کلمات درج تھے۔ اراکین اسمبلی کی جانب سے کتابیں ایک دوسرے کو مارنے سے مقدس کلمات کی توہین ہوئی۔

درخواست میں کہا گیا کہ اراکین اسمبلی کے اس عمل سے درخواست گزار سمیت پاکستان کے کروڑوں مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوئے۔ ملوث اراکین اسمبلی کے خلاف انسداد دہشتگردی ایکٹ کے تحت قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے۔

متعلقہ خبریں