جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

ملک بھر میں پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کی ہڑتال، شہریوں کو مشکلات کا سامنا

پیٹرولیم ڈیلرز

کراچی : ملک بھر میں پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کی ہڑتال کے باعث شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ کئی شہروں میں کھلے ہوئے پمپس پر پیٹرول ختم ہوگیا۔

پاکستان پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کی جانب سے آج ملگ گیر ہڑتال کا اعلان کیا گیا ہے۔ ڈیلرز ایسوسی ایشن کی ہڑتال وفاقی دارالحکومت تقریباً ناکام نظر آرہی ہے، بیشتر پمپس کھلے ہیں۔

ملک بھر میں تقریباً 9 ہزار 500 پیٹرول پمپس ہیں۔ پی ایس او آئل بزنس کا 70 فیصد ہے۔ پی ایس او کے کم و بیش تمام پمپس کھلے ہیں۔

گو کے 1000، شیل، ٹوٹل اور حسکول کے بھی پیٹرول پمپس کھلے ہیں۔ پاکستان آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کی فیول سپلائی بھی جاری ہے۔ پیٹرول پمپس پر گاڑیوں کا رش برقرار ہے۔ منافع کی شرح بڑھوانے کیلئے پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن ہڑتال پر قائم ہے۔

کراچی میں کئی مقامات پر پی ایس او کے پیٹرول پمپ بھی بند ہیں۔ عوام پیٹرول کی تلاش میں رُل گئے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ طلب میں اضافے باعث پیٹرول اور ڈیزل ختم ہوگیا ہے۔ پبلک ٹرانسپورٹرز من مانا کرایہ وصول کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : ملک بھر میں تمام پیٹرول پمپ کھلے رہیں گے: ترجمان وزارت پیٹرولیم

ڈپٹی کمشنر لاہور عمر شیر چٹھہ کے مطابق شہر میں موجود 62 پیٹرول پمپس پر پیٹرولیم مصنوعات کی فراہمی کا سلسلہ جا ری ہے۔ آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کے پیٹرول پمپس پر آئل کی فراہمی جاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب، ایل ڈی اے اور نیم سرکاری اداروں کی ویلفیئر پیٹرول پمپس اور ٹوٹل، اٹک، شیل، پی ایس او، زوم، حسکول، مائی پیٹرولیم، گو پیٹرولیم، یورو پمپس کی آئل کی فراہمی جاری ہے۔

ملک کے دیگر علاقوں میں بیشتر پیٹرول پمپ بند ہونے کے باعث شہریوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔ اِکا دُکا کھلے ہوئے پمپس پر موٹر سائیکلوں اور دیگر گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں ہیں۔

پاکستان اسٹیٹ آئل نے اپنے تمام پیٹرول پمپس کھلے رکھنے کا اعلان کر رکھا ہے۔ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ پی ایس او کے مجموعی طور پر 23 پیٹرول پمپس سے پٹرول کی فراہمی جاری ہے۔ فیصل آباد اور حیدر آباد میں ایک ایک جبکہ ملتان میں دو پیٹرول پمپس موجود ہیں۔

پشاور میں 4، کوئٹہ میں 1، سکھر میں 2 پیٹرول پمپس بھی کھلے ہیں۔ راولپنڈی 5 اور کراچی کے 7 پیٹرول پمپس پر فراہمی معمول کے مطابق جاری ہے۔

متعلقہ خبریں