جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

بجلی کا بِل دیں یا بچوں کی فیس؟ مسلم لیگ (ن)، بم گرا کر کہتے ہیں، گھبرانا نہیں : پی پی

بجلی کا بِل

اسلام آباد : مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی نے بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی مذمت کی ہے۔ مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ عوام بجلی کا بِل دیں یا بچوں کی اسکول کی فیس؟ یا پھر خودکشی۔ شیری رحمان نے کہا کہ عوام پر روز ایک بم گرا کر کہتے ہیں، گھبرانا نہیں۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے بجلی کی قیمتوں میں 2 روپے 37 پیسے مزید اضافے کی مذمت کی اور اضافہ واپس لینے کا مطالبہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ عمران صاحب! مہنگائی کی وجہ سے عوام روٹی، سبزی، آٹا، دال، گھی، چینی لیں، بجلی کا بِل دیں یا بچوں کی اسکول کی فیس؟ یا خودکشی کریں۔ نالائق اور نااہل کا استعفیٰ ہی غریب عوام کو مہنگائی، بیروزگاری اور مسائل سے نجات دلاسکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : نیپرا نے بجلی کی قیمتوں میں 2 روپے 37 پیسے فی یونٹ اضافہ کردیا

ترجمان ن لیگ کا کہنا تھا کہ آپ نے تو خودکشی کی نہیں، عوام بجلی اور گیس کے بِلوں میں اضافہ اور آپ کی نااہلی اور نالائقی کی وجہ سے خودکشی کرنے پر مجبور ہو گئے ہیں

مریم اورنگزیب نے کہا کہ ایک سال میں گیس کی قیمت میں 200 اور بجلی کی قیمت میں 40 فیصد اضافہ نالائق اور نااہل حکومت کا عوام کو تحفہ ہے۔ بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافہ کی وجہ سے صنعت، کاروبار اور روزگار بند ہو گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جب ملک کو آئی ایم ایف کے حوالے کر دیا گیا ہے، تو نتیجہ بجلی، گیس، روٹی روزی مہنگی ہونا ہی ہوگا۔

دوسری طرف پاکستان پیپلز پارٹی کی سینیٹر شیری رحمان نے بھی بجلی کی قیمتوں میں اضافے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ تباہی سرکار مہنگائی سے عام آدمی کی کمر توڑ رہی ہے۔ عوام پر روز ایک بم گرا کر کہتے ہیں، گھبرانا نہیں۔

شیری رحمان نے کہا کہ حکومت قیمتون میں ظالمانہ اضافے کر رہی ہے۔ نئے پاکستان میں بجلی، گیس اور پانی صرف اشرافیہ کے لئے ہوگا۔ عام آدمی کہاں جائے؟ کس سے رلیف مانگے؟ کیا حکومت سارے پاکستان کو لنگر میں بٹھائے گی؟  

انہوں نے کہا کہ حکومت نے 61 دن سے سینیٹ کو بند رکھا ہے۔ نیشنل اسیمبلی کو تالا لگا کر آرڈیننس کے ذریعے حکومت کرنا چاہتے ہیں۔ عوام پر مہنگائی کے بم گرا کر کہتے ہیں، کچھ نہ کہیں۔ حکومت پارلیمان اور عوام کے رد عمل سے ڈرتی ہے۔

متعلقہ خبریں