ن لیگ نواز شریف کی صحت پر سیاست نہیں گارنٹی کا بندوبست کرے : فواد چوہدری

فواد چوہدری گارنٹی

اسلام آباد : فواد چوہدری نے کہا ہے کہ ن لیگ نواز شریف کی صحت پر سیاست نہ کرے اور گارنٹی کا بندوبست کرے۔

وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے وفاقی کابینہ کے نواز شریف کے بیرون ملک روانگی کے فیصلے کو دفاع کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے بہت بڑا قدم اٹھایا ہے۔

انہوں نے کہا کہ شریف فیملی میں مسلم لیگ کی لیڈر شپ کی جنگ جاری ہے، لیکن ن لیگ اب نواز شریف کی صحت پر سیاست نہ کرے اور گارنٹی کا بندوبست کرے۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کی مثال آصف زرداری اور کئی دیگر ملزمان بھی حاصل کرنا چاہیں گے، بغیر کوئی پراسس اختیار کئے بھیجنا عملی طور پر ناممکن ہے۔

یہ بھی پڑھیں : نواز شریف کی جگہ میں ہوتا تو مر جانے کو ترجیح دیتا : فواد چوہدری

خیال رہے کہ میاں صاحب کی روانگی کا معاملہ ابھی ایک طرف ہوا نہیں ان کی واپسی کا مسئلہ کھڑا ہوگیا۔ یہ ہی وہ مسئلہ تھا جس کی وجہ سے نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے میں تاخیر ہوئی۔

ذیلی کمیٹی کی بیٹھک لگی اور غور کیا گیا کہ آیا نوازشریف کو جانے کی اجازت دی جائے یا نہیں۔ اس بات پر بھی غور کیا گیا کہ اگر قانون پیچیدگیوں کو مدنظررکھ کر سابق وزیراعظم کوجانے کی اجازت دے بھی دی جائے تو پھر شرائط کیا ہونگی؟ وہ واپس کب آئیں گے اور گارنٹی کیا ہوگی؟ واپس نہ آنے پر ذمہ دار کس کو ٹھہرایا جائے گا؟

نیب ذرائع نے بھی انہی نکات پر اعتراضات اٹھائے ہیں۔ اور سوال اٹھایا ہے کہ اگر میاں صاحب واپس نہ آئے تو کون ذمہ دار ہوگا؟

نیب کا کہنا ہے کہ مقدمات میں حاضری یقینی بنانے کیلئے حکومت طریقہ کار طے کرے۔ نیب کا یہ بھی موقف ہے کہ نیب نے انسانی ہمدردی کے طور پر ضمانت کی مخالفت نہیں کی، تاہم انہیں بیرون ملک بھیجنا وفاقی حکومت کا اختیار ہے۔

ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن نے نوازشریف کی واپسی کی حتمی تاریخ دینے سے انکار کردیا ہے۔ لیگی ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم کی آٹھ ہفتے کی ضمانت ہوئی ہے۔ حکومت کس بات کی تاریخ مانگ رہی ہے؟ علاج شروع ہوگا تو تب پتا چلے گا کہ کب واپسی ہوگی۔