جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

32 سال تک جعلی تقرر نامے پر نوکری کرنے والا پولیس افسر پکڑا گیا

32 سال تک

کراچی : 32 سال تک جعلی تقرر نامے پر اے ایس آئی سے ایس پی تک کی اصلی نوکری کرنے والا پولیس افسر اعجاز ترین جعلی نکلا۔

پولیس افسر اعجاز ترین کے جعلی لیٹر پر اے ایس آئی بھرتی ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ اعلیٰ افسران کو 32 سال تک معلوم نہ ہوسکا۔

بھرتی اسلام آباد پولیس سے ہوئی، بعد ازاں سندھ ٹرانسفر کرالیا گیا۔ مبینہ جعلی لیٹر پر بھرتی اعجاز ترین آؤٹ آف ٹرن میں ترقی کرتا کرتا ایس پی کے عہدے تک پہنچا۔

بطور ایس پی سندھ میں کئی شہروں میں پوسٹگ رہی اور اس دوران بلاول بھٹو سمیت اہم شخصیات سے ملتا رہا۔ عدالتی احکامات کے بعد آؤٹ آف ٹرن ترقی واپس ہوئی تو انسپکٹر بن بیٹھا۔

یہ بھی پڑھیں : کراچی میں پولیس اہلکار کو لوٹنے کی کوشش ناکام، مقابلے کے بعد دو ملزمان گرفتار

بطور انسپکٹر درجنوں تھانوں میں ایس ایچ او رہا، کسی کو ہوا نہیں لگی۔ جعلی لیٹر پر بھرتی کا انکشاف سینیارٹی کے لیے کی گئی اپیل کی جانچ پڑتال کے دوران ہوا۔

انسپکٹر اعجاز ترین نے 16 اگست 1989 کا تقرر نامہ پیش کیا۔ اعجاز ترین 1997 میں اسلام آباد پولیس سے اصلی حکمنامے پر سندھ پولیس میں آگیا۔

عدالتی حکم پر ملازمت سے فارغ کردیا گیا، آئی جی نے سرکاری اسلحہ و سامان واپس لینے کی ہدایت کردی۔

متعلقہ خبریں