پی ٹی آئی کا گورنر سندھ کی تبدیلی پر غور

کراچی: گورنر عمران اسماعیل کے متنازعہ بیانات اور صوبے میں گورنر کی تبدیلی کے مطالبے کے پر اب وفاقی حکومت نے بھی گورنر کو تبدیل کرنے پر غور شروع کردیا ہے۔

ذرائع کے مطابق گورنر کی مقرری کے لیئے پی ٹی آئی اور اپوزیشن میں اندرونی جنگ چھڑگئی ہے، ثمرعلی خان، نادر اکمل لغاری اور علی محمد مہر کے نام نئے گورنر کے لیئے زیر بحث ہیں۔

ذرائع نے بتایا کہ پی ٹی آئی اپنے سابق ایم پی اے اور کے آئی ڈی سی ایل سنبھالنے والے ثمر علی خان کو گورنر سندھ بنانے کے لئے سرگرم ہیں، ثمرعلی خان پر ملک کے سب سے بڑے منصب پر فائز بڑی شخصیت کا دست شفقت بھی موجود ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی سندھ کے سابق صدر نادر اکمل لغاری بھی گورنر سندھ کی ڈور میں شامل ہیں، نادر اکمل نے پیر اور منگل کی درمیانی شب اسلام آباد سے کراچی آنے والے پی ٹی ائی کے رکن قومی اسمبلی سے ان کی رہائش گاہ پر اھم ملاقات کی۔

ذرائع کے مطابق نادر اکمل لغاری کی گورنر سندھ سے دو اہم ملاقاتیں بھی اسی سلسلے کی کڑی بتائی جاتی ہیں، پی ٹی آئی میں بڑے منصب پر فائز شخصیت کی مخالف لابی نادر اکمل لغاری کو گورنر سندھ بنوانے کے لئے سرگرم ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ ایم کیو ایم نے بھی اپنا گورنر لانے کے لیئے لابنگ شروع کردی ہے، ایم کیو ایم کا مؤقف ہے کہ گورنر ہمیشہ اردو بولنے والا مقرر کیا جاتا ہے، صوبے میں دو سندھی بولنے والے اہم منصب پر فائز نہیں کیئے جاتے ہیں، پیپلز پارٹی کا وزیراعلیٰ سندھی بولنے والا مقرر ہے، گورنر ہمارا ہونا چاہیئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ جی ڈی اے نے پی ٹی ائی میں ضم ہونے کے لئے اپنا گورنر بنوانے کی شرط عائد کردی ہے، جی ڈی اے علی محمد مہر کو گورنر سندھ بنانا چاہتی ہے۔