جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

پی ٹی وی فیس جمع ہوتی ہے، بلدیہ عظمیٰ کیلئے ٹیکس اکھٹا نہیں کیا جاسکتا؟ مرتضیٰ وہاب

پی ٹی وی فیس

کراچی : مرتضیٰ وہاب کا کہنا ہے کہ پی ٹی وی لائسنس کی فیس جمع کیوں ہوتی ہے؟ کیا وجہ ہے کے الیکٹرک سے بلدیہ عظمیٰ کے لئے ٹیکس اکھٹا نہیں کیا جاسکتا؟

مرتضیٰ وہاب نے بحیثیت ایڈمینسٹریٹر بابائے قوم کی برسی کے موقع پر مزار پر حاضری دینے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مجھے امید ہے کہ ہم سب اس پاکستان کے لئے کام کریں گے، جس کا خواب انھوں نے دیکھا تھا۔

انہوں نے کہا کہ کراچی میرا اپنا شہر ہے، ویسے بھی گھومتا ہوں اور بارش میں بھی گھومتا پھرتا رہا۔ تمام اداروں نے بارش کی صورتحال میں مل کر اچھا کام کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف والے پچھلے سال تک وسیم اختر کو الزام دیتے تھے۔ اب مجھے الزام دے رہے ہیں، وفاقی وزیر تو سڑکوں پر نہیں گھوم رہا تھا، کراچی والی گھوم رہے تھے۔

یہ بھی پڑھیں : کے الیکٹرک بلدیہ عظمیٰ کراچی کی سات ارب کی نادہندہ نکلی

مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ وسیم اختر چار سال تک یہ کہتے رہے کہ اختیارات نہیں ہیں، اگر اختیارات نہیں تھے تو پھر میں کس چیز پر قابض ہو رہا ہوں؟ 2008 سے میونسپل ٹیکس اکھٹا کیا جا رہا ہے، وسیم اختر نے بھی اکٹھا کیا، فرق یہ ہے کہ میں ٹارگٹ پورا کروں گا۔

ایڈمینسٹریٹر کراچی کا کہنا تھا کہ گورنر سندھ سے پوچھتا ہوں، پی ٹی وی لائسنس کی فیس کے الیکٹرک کے ذریعے جمع کیوں ہوتی ہے؟ کیا وجہ ہے کے الیکٹرک سے بلدیہ عظمیٰ کے لئے ٹیکس اکھٹا نہیں کیا جاسکتا؟

انہوں نے کہا کہ یہ ٹیکس کے ایم سی کے اکاؤنٹ میں جائے گا۔ میں تو عبوری ایڈمینسٹریٹر ہوں میں چلا جاؤں گا۔ آنے والے میئر کے پاس کے ایم سی کے اکاؤنٹ میں پیسہ ہوگا۔ وہ میئر وسیم اختر کی طرح یہ اختیارات اور مالی وسائل کا رونا نہیں روئے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ وفاقی ادارے بھی کے ایم سی کی مدد کریں تاکہ ہم کام کر سکیں۔ حکومت سندھ نے شوکت ترین اور نیپرا کے چیئر مین سے بات کی ہے اور انہوں نے اس معاملے پر ہمارے مؤقف کی حمایت کی ہے۔

متعلقہ خبریں