جی ٹی وی نیٹ ورک
اہم خبریں

قطر : امریکہ اور ایران کے درمیان بالواسطہ مذاکرات بغیر کسی پیش رفت کے ناکام ہوگئے

بالواسطہ مذاکرات

دوحہ : امریکہ اور ایران کے درمیان قطر میں ہونے والے بالواسطہ مذاکرات بغیر کسی پیش رفت کے ناکام ہوگئے ہیں۔

مغربی ذرائع ابلاغ کے مطابق ویانا بات چیت میں ناکامی کے بعد ایران نے بین الاقوامی معائنہ کاروں کے نگرانی کے کیمرے بند کر دیئے اور اب ان کے پاس کافی زیادہ افزودہ یورینیم موجود ہے، جس سے اگر وہ چاہیں تو کم از کم ایک جوہری بم بنا سکتے ہیں۔

ویانا میں ایران کے جوہری پروگرام کے حوالے سے جاری بات چیت میں ڈیڈ لاک کے بعد دوحہ میں ہونے والے بالواسطہ مذاکرات دو دن بعد بھی بغیر کسی پیش رفت کے ختم ہوگئے ہیں۔ دونوں ممالک اس ناکامی کا الزام ایک دوسرے پر لگا رہے ہیں، جبکہ اب تک بات چیت کے دوسرے مرحلے کے حوالے سے کچھ نہیں بتایا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : کراچی : جعلی پاکستانی پاسپورٹ پر بیرون ملک جانے کی کوشش ناکام، دو ایرانی شہری گرفتار

یوروپی یونین کے ثالث اینریک مورا نے دوحہ مذاکرات کو ضرورت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بدقسمتی سے ابھی تک وہ پیش رفت نہیں ہوئی، جس کی یورپی یونین نے امید کی تھی۔

انہوں نے کہا کہ ہم عدم پھیلاؤ اور علاقائی استحکام کے لیے ایک اہم معاہدے کو ٹریک پر واپس لانے کے لیے اور بھی زیادہ عجلت کے ساتھ کام کرتے رہیں گے۔

ایرانی خبر رساں ادارے کے مطابق مذاکرات نے ڈیڈ لاک کو توڑنے کے لیئے کوئی اثر نہیں ڈالا ہے۔ امریکی مؤقف میں ایران کے لیے معاہدے سے اقتصادی طور پر فائدہ اٹھانے کی ضمانت شامل نہیں ہے۔ امریکہ معاہدے کی بحالی چاہتا ہے، مگر ایرانی اقتصادی کامیابیوں کو محدود بھی رکھنا چاہتا ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ مذاکرات پیشہ ورانہ اور سنجیدہ ماحول میں منعقد ہوئے اور اگلے مرحلے کے لیئے رابطے جاری رہیں گے۔

متعلقہ خبریں