جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

کوئٹہ : سرکاری ملازمین کا دھرنا جاری، میٹرک کے امتحانات میں ڈیوٹیاں دینے سے انکار

میٹرک کے امتحانات میں

کوئٹہ : سرکاری ملازمین کا تنخواہوں میں اضافے کے لیئے دھرنا جاری ہے، دھرنے میں شامل سرکاری اساتذہ نے میٹرک کے امتحانات میں ڈیوٹیاں دینے سے انکار کردیا۔

کوئٹہ کے ریڈ زون کے قریب ہاکی چوک پر تنخواہوں میں 25 فیصد اضافے کے لئے لگائے گئے سرکاری ملازمین کے احتجاجی کیمپ میں دیئے گئے دھرنے کا آج بارہواں روز ہے۔ مطالبات کی منظوری پر صوبائی حکومت اور ملازمین کے درمیان ڈیڈلاک تاحال برقرار ہے۔

احتجاج کے باعث ریڈ زون کے راستے بدستور بند ہیں۔ مظاہرین کا کہنا ہے کہ جب تک مطالبات تسلیم نہیں ہوں گے، دھرنا جاری رہے گا۔ وفاق کی طرز پر ملازمین کی تنخواہوں میں 25 فیصد اضافے کا نوٹیفکیشن جاری کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں : کوئٹہ میں کورونا پھیلنے لگا، مزید 70 افراد وباء کی لپیٹ میں آگئے

دوسری طرف کوئٹہ سمیت صوبے بھر میں آج سے میٹرک کے امتحانات شروع ہوگئے ہیں، جس میں 1 لاکھ 30 ہزار طلباء و طالبات شرکت کررہے ہیں۔

دھرنے پر بیٹھے اساتذہ نے میٹرک کے امتحانات میں ڈیوٹیاں دینے سے انکار کردیا ہے۔ اس حوالے سے چئیرمین بلوچستان بورڈ پروفیسر یوسف بلوچ کا کہنا ہے کہ امتحانات ہر صورت ہونگے، بچوں کا وقت ضائع نہیں کرسکتے۔

انہوں نے بتایا کہ امتحانات کیلئے 1200 اساتذہ و دیگر عملے پر مشتمل سپروائزری اسٹاف کی خدمات لی گئیں ہیں۔ جہاں کمی ہے، وہاں ہم اپنے ریٹائرڈ اساتذہ اور پرائیوئٹ عملے سے مدد لے کر ڈیوٹیاں کروا رہے ہیں۔

متعلقہ خبریں