جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

رحمان ملک نے امریکی خاتون کی جانب سے لگائے گئے الزامات کو مسترد کردیا

امریکی خاتون

اسلام آباد : رحمان ملک نے امریکی خاتون کی جانب سے لگائے گئے الزامات کو مسترد کردیا ہے، ان کا کہنا ہے کہ امریکی خاتون کے خلاف قانونی کارروائی کے لیئے وکلاء سے رائے مانگ لی ہے۔

ترجمان چیئرمین داخلہ کمیٹی نے کہا ہے کہ سینیٹر رحمان ملک امریکی خاتون سنتھیا ڈی رچی کی منگھڑت، بیہودہ و نازیبا الزامات کے جوابات دینا اپنی توہین سمجھتے ہیں اور الزامات کی سختی سے تردید کرتے ہیں۔

ترجمان کے مطابق امریکی خاتون کی الزامات بدنیتی پر مبنی ہے، جس کا مقصد سینیٹر رحمان ملک کی ساکھ کو نقصان پہنچانے کا ہے، انہوں نے نازیبا الزامات کسی مخصوص فرد یا گروہ کے اکسانے پر لگائے ہیں۔ سینیٹر رحمان ملک نے ہمیشہ بھارتی مظالم اور کشمیریوں و بھارتی مسلمانوں پر مظالم کیخلاف آواز بلند کی ہے۔

راء کیطرف سے دھمکی آمیز ٹویٹس و پیغامات میں سینیٹر رحمان ملک کو اسطرح کے بدنما الزامات لگانے کے دھکمیاں پہلے بھی ملی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : کورونا وائرس کا پھیلاؤ : رحمان ملک کا آل پارٹیز کانفرنس اور سارک کانفرنس کا مطالبہ

اپنی تصانیف ”کشمیر بلیڈنگ” “مودی وار ڈاکٹرائن” “داعش – رائزنگ مونسٹر ورلڈوائیڈ” اور قومی و بین القوامی اخباروں میں کالموں، ٹاک شوز اور کمیٹی میں قراردادوں اور اقوام متحدہ کو انسانی حقوق کے تنظیموں کے نام خطوط میں بھارتی حکومت، راء، آر ایس ایس اور وزیراعظم نریندر مودی کی کشمیریوں اور بھارتی مسلمانوں پر مظالم سے پردہ اٹھاتے آرہے ہیں۔

ترجمان نے مزید کہا کہ سینیٹر رحمان ملک اپنے خلاف منگھڑت، بیہودہ و نازیبا الزامات کا جواب دینا اپنے وقار اور رتبے کے برخلاف سمجھتے ہیں۔ بطور خاتون ان کے کسی قسم کی توہین آمیز کلمات سے جواب دینا نہ ان کا شیوہ ہے اور نہ وہ ایسا چاہیں گے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ سینیٹر رحمان ملک کیخلاف الزامات اس وقت سامنے آئے، جب انھوں نے بحیثیت چئیرمین سینیٹ قائمہ کمیٹی داخلہ امریکی خاتون کے محترمہ بینظیر بھٹو شہید کیخلاف لگائے گئے بیہودہ الزامات کا نوٹس لیا۔

ترجمان نے بتایا کہ سینیٹر رحمان ملک کے بیٹوں نے آزادانہ طور پر اپنے وکیلوں سے ضروری قانونی رائے مانگ لی ہے تاکہ امریکی خاتون کے خلاف قانونی کارروائی اور ہتک عزت کا دعویٰ دائر ہوسکے۔

متعلقہ خبریں