جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

پریزائڈنگ افسران کی گمشدگی سے متعلق رپورٹ جاری، مسلم لیگ ن کے تحفظات درست قرار

پریزائڈنگ افسران

ریٹرنگ افسر نے این اے 75 کے 20 پریزائڈنگ افسران کی گمشدگی سے متعلق رپورٹ جاری کردی ہے۔ رپورٹ میں مسلم لیگ ن کے امیدوار کے تحفظات کو درست قرار دیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق مسلم لیگ ن کی امیدوار نوشین افتخار نے 23 پریزائڈنگ افسران کی تاخیر سے آمد پر تحفظات کا اظہار کیا، جبکہ پی ٹی آئی کے امیدوار علی اسجد ملہی نے اعتماد کا اظہار کیا۔

آر او کے حاصل کردہ فارم 45 کے مطابق متعلقہ پولنگ اسٹیشن پر 18 ہزار 722 ووٹ ڈالے گئے، جس میں سے مسلم لیگ ن کو 3500 اور پی ٹی آئی کو 12 ہزار 763 ووٹ ملے۔ ووٹ ڈالنے کا تناسب 75 فیصد رہا۔ 1 ہزار 731 ووٹ مسترد ہوئے۔

امیدوار نوشین افتخار کے فارم 45 کے مطابق ان کے 5000 اور علی اسجد کے 6 ہزار 705 ووٹ تھے۔ ووٹ ڈالنے کی شرح 45 فیصد تھی، 139 ووٹ مسترد ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں : مسلم لیگ ن کی این اے 75 میں دوبارہ پولنگ کی استدعا، الیکشن کمیشن نے تفصیلات طلب کرلیں

رپورٹ میں کہا گیا کہ ڈیٹا سے ظاہر ہوتا ہے کہ اسجد ملہی کے مخالف امیدوار کے ووٹ میں 1543 ووٹوں کی کمی ہوئی، مسترد شدہ ووٹوں میں 1592 کا اضافہ ہوا۔ اس بات کی مسلم لیگ ن کے امیدوار کے تحفظات سے ہم آہنگی پائی جاتی ہے۔

صوبائی الیکشن کمشنر انکوئری کا آغاز کرنے 4 بجے شام تک انتظار کرتے رہے، 8 پریذائڈنگ افسران کے جواب ایک جیسے تھے، انہوں نے کہا کہ کہ دھند کے باعث وہ ساڑھے چار بجے آر او آفس پہنچے۔ 8 پی او نے وٹس ایپ پر نتائج نہ بھیجنے پر کہا کہ ان کی فون بیٹری کم ہو گئی تھی۔

پریزائڈنگ افسران حیرت زدہ اور خوفزدہ تھے۔ انہوں نے بہانا بنایا کہ ٹرانسپورٹ خراب ہوئی اور وٹس ایپ کام نہیں کر رہا تھا،

14 پولنگ اسٹیشنز کے مسلم لیگ ن امیدوار اور پریزائڈنگ افسران کے نتائج میں فرق ہے۔ ظاہر ہوتا ہے کہ پریذائڈنگ افسران نے نتائج تبدیل کیے، متعلقہ پولنگ اسٹیشن پر دوبارہ الیکشن کرایا جائے۔

متعلقہ خبریں