جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

امریکی کمپنی کا کورونا وائرس کو غیر مؤثر بنانے والی اینٹی باڈیز کو تین ہفتوں میں تیار کرنے کا دعویٰ

غیر مؤثر بنانے والی

امریکی کمپنی نے دعویٰ کیا ہے کہ کورونا وائرس کو پہنچانے اور غیر مؤثر بنانے والی اینٹی باڈیز کی تیاری میں تین ہفتوں کی دوری پر ہیں۔

امریکا، برطانیہ، چین، روس اور اسرائیل سمیت دنیا کے کئی ممالک میں کورونا وائرس کی 100 سے زائد ویکسین کی تیاری پر کام جاری ہے۔ چین کی ریسرچ لیبارٹری تو دوسرے مرحلے کی جانب منتقل ہوچکی ہے، جس میں ویکسین کو انسان پر استعمال کرکے نتائج دیکھے جائیں گے۔

پڑوسی ملک بھارت میں ویکسین پر کام کرنے والی کمپنی کے سی ای او آدھر پونا والا نے امید ظاہر کی ہے کہ سال کے آخر تک کورونا وائرس کی ویکسین بنانے میں کامیاب ہوجائیں گے۔ ہماری توجہ اچھی اور محفوظ ویکسین بنانے کی ہے، جس میں ہمیں کوئی جلدی نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں : سائنسدانوں کا کورونا ویکسین کا تجربہ بندروں پر کامیاب

دوسری جانب امریکی کمپنی ڈسٹریبیوٹڈ بائیو کے سربراہ نے دعویٰ کیا ہے کہ ہماری کمپنی کورونا وائرس سے مقابلہ کرنے کے لیئے اینٹی باڈیز کی تیاری میں تین سے چار ہفتوں کی دوری پر ہیں۔ ہماری کمپنی وائرس کو پہنچانے اور غیر مؤثر بنانے والی اینٹی باڈیز پر کام کررہی ہے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ کورونا مریض کو ویکسین دینے کے بعد مدافعتی ردعمل پیدا ہونے کا منتظر رہنے کے بجائے، ہم ایسی اینٹی باڈیز دیں گے جو کورونا مریض کو 20 منٹ میں اس قابل بنادے گی جس سے وہ کورونا کو شکست دینے میں کامیاب ہوسکے۔

متعلقہ خبریں