جی ٹی وی نیٹ ورک
کالمز و بلاگز

خواتین کی تذلیل کا روایتی طریقہ

rishta-parade-or-rishta-selection-urdu-blog

خواتین کوقدرت نے نرم مزاج اور حساس بنایا ہے اور یہ مزاج اس کی جبلت میں شامل ہے۔لڑکیاں اپنے سے جڑے ہر رشتے کے بارے میں حساس ہوتی ہیں۔مشرقی لڑکیوں کی زندگی کا سب سے بڑا لمحہ وہ ہوتا ہے

 

جب وہ شادی ہوکر اپنے سسرال جاتی ہیں ۔ اس لمحے سے پہلے اسے بہت سے دوسرے لمحات سے گزرنا پڑتا ہے جس میں سے ایک بڑا مشکل لمحہ ہوتا ہے جو رشتہ پریڈ کہلاتا ہے یعنی کے جب لڑکا اور اس کی فیملی لڑکی کا ” معائنہ ” کرنے آتے ہیں۔
 

اکثر لڑکوں کی اماں بیٹے کی شادی کی عمر پہنچتے ہی رشتہ ڈھونڈنے نکل جاتی ہیں ۔ بیٹا چاہے جتنا ناکارہ ہو بچی سگھڑچاہیئے ہوتی ہے، بیٹا جتنا ہی لاابالی ہو لڑکی اتنی ہی سلیقہ مند چاہییے ،

لڑکا جتنا ہی بھدا ہو لڑکی فل سلم و اسمارٹ چاہیئے، لڑکا جتنا ہی کالا ہو لڑکی دودھ کی طرح سفید چاہیئے، لڑکے کا ماضی جیسا ہو لڑکی کا ماضی پاک وپوتر ہونا چاہیئے، یہ وہ چاہتیں ہیں جو اکثر بیٹوں کی مائیں  چاہتی ہیں۔

اسی طرح کی درجنوں ڈیمانڈز کے ساتھ لڑکے کی اماں اس مشن” پرفیکٹ لڑکی” کی تلاش میں نکلتی ہیں ، ہفتے میں دو تین جگہ جاتی ہیں، وہاں پر بھرپور ناشتہ کرتی ہیں۔

اگر انتہائی کوئی بد اخلاق اماں ہو تو وہیں رشتے والی آنٹی کے کان میں کہہ دیتی ہیں کے لڑکی کا قد بہت چھوٹا ہے یاپھر رنگت سانولی ہے بہن اس لڑکی کی ۔

Pakistani Rishta, Online Shadi Website, Matrimonial USA, UK, zaroorat
 
یہ عمل لڑکے کی ماں تو دہرا دیتی ہے مگر اس کو یہ اندازہ نہیں ہوتا کہ اُس کے اس عمل سے لڑکی کے دل پر کیا گزری یا لڑکی کے والدین کا اس بات پر کتنا دل دُکھا۔ یہ رشتہ پریڈ برُی چیز نہیں مگر اس کی کچھ اخلاقی اصول ہونے چاہیئے ۔
سب سے پہلے اگر ممکن ہو تو گھر جانے سے پہلے ہی لڑکی کے بارے میں پوری معلومات اور اس کی قد اور رنگت کو جانچ لیں اور اگر سمجھ میں آرہا ہو تو پھر جایا جائے نہ کہ آپ وہیں جاکر منظر دیکھیں ۔اب تو موبائل کا دور ہےتصویر یا ویڈیو سے بھی اندازہ لگایا جاسکتا ہے۔
 
لڑکی کے گھر جایا جائےتو لڑکا ساتھ ہو اور پھر لڑکی چائے لے کر آئے اور پھر لڑکے سے بولا جائے کہ دیکھ لو ، اگر لڑکے کو سمجھ بھی آجائے تو اماں گھر آکر اپنے رخ سے لڑکی بتاتی ہے کہ دیکھو قد کتنا چھوٹا تھا تمھارے ساتھ بُری لگے گی، رنگت بھی سانولی تھی  اور وہ بھی میک اپ کی وجہ سے تھوڑی بہتر دکھ رہی تھی۔

لڑکی کی عمر26 سال ہے اب  1 ، 2 سال  مزیدلگیں گے، اولاد ہونے میں بھی مسئلہ ہوسکتا ہے اور اسی طرح کی بہت سی باتیں کرکے لڑکے کو انکا ر کرنے پر راغب کرتی ہیں۔

 
چلئیےمعاشرے کو الٹ کر دیکھتے ہیں اگر ایسا ہو کہ لڑکی والے بمعہ لڑکی لڑکے کے گھر آئیں اور لڑکا سامنے آکر بیٹھے اور پھر اس کے سامنے اُس کی برائی کی جائے یا پھر گھر جاکر اس کےوالدین کو فون کرکے بتایا جائے کہ بھئی رشتہ منظور نہیں ، ہمیں آپ کا لڑکا سمجھ نہیں آیا ،وہ تھوڑا کمزور سا ہے، کالا بھی ہے اور گنج پن کا بھی شکار لگتا ہے، تو مجھےیہ بتائیں کے لڑکے کی عزت نفس کو دھچکا لگے گایا نہیں؟

لڑکے کے والدین کو بُرے لگے گا یا نہیں۔  یہ تمام باتیں احساس کرنے کی ہے اگر ہوجائے تو کیا ہی بات ہے۔

rishta parade or rishta selection urdu blog

 

 
گزارش اتنی ہے کہ رشتہ اپنی پسند سے کرنا سب کا حق ہے مگر کسی بھی انسان کی عزت نفس کو ٹھیس پہنچانے کا حق کسی کو حاصل نہیں۔ اگر آپ یہ عمل کریں گے تو کسی نہ کسی دل پلٹ کر یہ آپ کے سامنے آئے گا، شاید آپ کی بیٹی کے ساتھ یہ عمل ہوجائے۔
ہاں ملاقات کے بعد فیملی کا طور طریقہ نہ سمجھ آئے تو بات الگ ہےکیونکہ اس معاشرے میں گھٹیا قسم کے لوگ بھی پروان چڑھ رہے ہیں ۔آسان حل یہ ہے کہ آپ تصویر یا ویڈیو کی زریعے اور بائیو ڈیٹا کی مدد سے اس لڑکی کو سمجھ لیجئے یا پھر لڑکی کو کسی تقریب میں دیکھا جاسکتا ہے۔
یا کوئی دوسرا طریقہ بھی  اپنایا جاسکتا ہے جس سے عزت نفس مجروح  نہ ہو۔بس یہ رشتہ پریڈ کے نام پر لڑکیوں کی عزت نفس کچلنا اب بند ہونا چاہیئے۔
 
نوٹ : جی ٹی وی نیٹ ورک اور اس کی پالیسی کا لکھاری اور نیچے دئے گئے کمنٹس سے متّفق ہونا ضروری نہیں۔
[simple-author-box]

متعلقہ خبریں