جی ٹی وی نیٹ ورک
دنیا

شہریت ترمیمی ایکٹ، احتجاج کرنے والوں کو گولیاں ماری گئیں: تلنگانہ

شہریت ترمیمی ایکٹ

تلنگانہ: بھارت کے صوبے تلنگانہ میں اتنہا پسند ہندوؤں کا مسلمانوں پرظلم و جبر کا سلسلہ جاری ہے، بی جے پی اور ار ایس ایس کے کارکنوں کا مسجد پر پتھرائو اور علاقے میں رہنے والے مسلمانوں کے گھروں کو آگ لگا دی۔

بھارت میں شہریت ترمیمی قانون کیخلاف ظلم و جبر کے باوجود شہر شہر مظاہرے تھم نہ سکے، مسلم اقلیتی علاقہ میں قتل و خون کا بازار گرم ہوگیا ہے۔

بھارت کے صوبہ تلنگانہ کے ضلع عادل آباد میں حالات انتہائی کشیدہ ہو گئے ہیں، مسلمانوں کےاجتماع میں ہندو انتہا پسندوں دھاوا بول دیا، مسجد پر پتھرائو کرکے موذن کو تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور علاقہ مکین مسلمانوں کے پینتیس گھروں کو جلا دیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں: مقبوضہ کشمیر : بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں گرفتار پانچ نوجوانوں کی تشدد زدہ لاشیں برآمد

مودی سرکار نے پورا شہر فوجی چھاؤنی میں تبدیل کرکے رکھ دیا ہے اور انٹرنیٹ سروس معطل کردی گئی ہے۔

اُدھر مغربی بنگال میں بی جے پی کے صدر اور رکن اسمبلی دلیپ گھوش نے ریلی سے خطاب میں کہا ہے کہ جن ریاستوں میں ان کی جماعت بی جے پی کی حکومت ہے وہاں شہریت ترمیمی ایکٹ کے خلاف احتجاج کرنے والوں کو گولیاں ماری گئیں ہیں۔

متعلقہ خبریں