جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

سندھ حکومت کٹ اور کمیشن نہ ہونے پر ویکسین نہیں خرید رہی ہے : حلیم عادل شیخ

سندھ حکومت کٹ

کراچی : حلیم عادل شیخ کا کہنا ہے کہ اپنے کمیشن کے چکر میں ویکسین خریدنے سے بھاگ رہے ہیں، سندھ حکومت کٹ اور کمیشن نہ ہونے پر ویکسین نہیں خرید رہی ہے۔

اپوزیشن لیڈر سندھ اسمبلی حلیم عادل شیخ نے جاری ویڈیو بیان میں سندھ میں کورونا ویکسین صورتحال پر کہا ہے کہ سندھ حکومت نے 13 سال میں صحت 768 ارب خرچ کیے۔ 18 ویں ترمیم کے تحت صحت صوبائی معاملہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ پچھلے سال 5 ارب کورونا فنڈ کے نام پر رکھے گئے تھے۔اس سال بھی ڈیڑھ سو ارب سے زیادہ سندھ کا بجٹ ہے، لیکن ایک پیسہ بھی کورونا کے لیے خرچ نہیں کیا گیا۔ کورونا آتے ہی وزیراعلیٰ نے ہاتھ ہلانے کے ڈرامے شروع کیے، وزیراعلیٰ کی اداکاری شروع ہوگئی۔

یہ بھی پڑھیں : وفاقی حکومت نے 147 ارب روپے مزید دینے ہیں، نہیں لگتا جون میں ملیں گے: وزیراعلیٰ سندھ

ان کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت نے کورونا ٹیسٹنگ کٹس، ماسک، ویکسین بھی اپنی نہیں خریدی۔ تمام سامان اور ویکسین وفاق نے فراہم کیا۔ سندھ کے لوگوں کی فکر نہیں اداکاری اور ہٹو بچو چل رہا ہے۔ وفاق نے صوبوں کو اجازت دی پنجاب نے ویکسین خریدی، چھوٹے ادارے بھی ویکسین خرید رہے ہیں۔

حلیم عادل شیخ نے کہا کہ ویکسین میں کٹ اور کمیشن نہ ہونے پر سندھ حکومت خرید نہیں کررہی ہے۔ سب کو پتہ ہے وفاق، پنجاب حکومت نے جس ریٹ پر خریدی انہیں بھی وہی ریٹ ملے گا۔ اپنے کمیشن کے چکر میں ویکسین خریدنے سے بھاگ رہے ہیں۔

قائد حزب اختلاف کا کہنا تھا کہ وزیر اعلیٰ جتنی اداکاری کرتے ہیں انہیں انیل کپور کی جگہ ہونا چاہیے۔ جو شخص ایک ویکسین نہ لیکر دے سکے وہ صوبے کی عوام کو کیا دے گا۔ وزیراعلیٰ صاحب سندھ کے عوام کی جان چھوڑیں۔

متعلقہ خبریں