جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

سندھ ہائی کورٹ کا قصر فاطمہ (مہٹہ پیلس) کو گرلز میڈیکل ڈینٹل کالج بنانے کا حکم

قصر فاطمہ (مہٹہ پیلس)

کراچی : سندھ ہائی کورٹ نے فریقین کی رضا مندی سے قصر فاطمہ (مہٹہ پیلس) کو گرلز میڈیکل ڈینٹل کالج بنانے کا حکم دے دیا۔

سندھ ہائیکورٹ میں محترمہ فاطمہ جناح کے اثاثوں کی وراثت سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ دوران سماعت عدالت برہم ہو گئی۔

سندھ ہائی کورٹ نے ریمارکس دیئے کہ کل آپ مزار قائد پر بھی ناچ گانا کریں گیں! آپ نے اس عمارت کا تقدس پامال کیا ہے۔ فاطمہ جناح نے وہاں آخری سانسیں لی تھی آپ ناچ گانا کر رہے ہیں۔

عدالت نے کہا کہ صوبائی حکومت کو دیکھ بھال کیلئے دیا گیا تھا، آپ نے غیر قانونی ٹرسٹ بنا لیا۔ فاطمہ جناح نے ہمیں پورا ملک دیا ہم ان کے اثاثوں کیساتھ کیا کررہے ہیں۔ درخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ فریقین کے درمیان میڈیکل ڈینٹل کالج بنانے پر اتفاق ہے۔

یہ بھی پڑھیں : قصر فاطمہ کے لئے مہتہ پیلس کا نام استعمال کرنے سے روک دیا گیا

عدالت نے فریقین کی رضا مندی سے قصر فاطمہ (مہٹہ پیلس) کو گرلز میڈیکل ڈینٹل کالج بنانے کا حکم دے دیا۔ عدالت نے کہا کہ گرلز ڈینٹل کالج میں ہاسٹل بھی شامل ہوگا۔

کالج کو چلانے کے لئے فریقین نے انڈس اسپتال کے ڈاکٹر عبدالباری، ڈاکٹر ادیب رضوی، جسٹس ریٹائرڈ سرمد جلال عثمانی، جسٹس ریٹائرڈ فہیم صدیقی اور امیر علی کے نام تجویز کئے گئے ہیں۔ فریقین نے کہا کہ آئندہ سماعت پر ٹرسٹیز کی رضا مندی سے بھی آگاہ کیا جائے گا۔

عدالت نے کہا کہ ٹرسٹ میں شامل ہونے کے لئے تمام افراد سے رضامندی لی جائے گی۔ عدالت نے مہٹہ پیلس میں موجود سامان کی فہرست مرتب کرنے اور سندھ حکومت کے کلچر ڈیپارٹمنٹ سے مہٹہ پیلس سے 30 سال میں ہونے والی آمدن کی تفصیلات طلب کرلی۔

عدالت نے فریقین سے درخواست گزار کو پچاس سالہ طویل پیروی کرنے پر مالی طور پر ازالہ کرنے سے متعلق تجاویز طلب کرلیں۔

عدالت نے اپنے حکم میں مزید کہا کہ قصر فاطمہ کو گرلز میڈیکل ڈینٹل کالج میں تبدیل کرنے جو تختی لگائی جائے اس پر تمام قانونی ورثہ کے نام درج کئے جائیں۔ درخواست کی مزید سماعت یکم نومبر تک ملتوی کردی گئی۔

متعلقہ خبریں