جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

مری میں برف باری، روکنے کے باوجود عوام کا جانے کا اصرار، انتظامیہ متحرک

روکنے کے باوجود

روالپنڈی : پولیس اور انتظامیہ کے روکنے کے باوجود مری میں ہونے والی شدید برفباری کے دوران  بڑی تعداد میں لوگ موجود ہیں۔

سی پی او راولپنڈی ساجد کیانی کا کہنا ہے کہ مسلسل برفباری کی وجہ سے سڑکوں کو کلیئر کرنے میں مشکلات ہیں، ٹریفک پولیس، پنجاب ہائی وے اور نیشنل ہائی وے مل کر کام کر رہے ہیں۔ شہریوں کو احتیاطی تدابیر اپنانے کے لیے بار بار اعلانات کیے جا رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : مری میں شدید برف باری، ہزاروں افراد کی جان کو خطرہ، 19 افراد جاں بحق

ان کا کہنا تھا کہ بچے، بزرگ اور خواتین کو محفوظ مقام پر پہنچانا اولین ترجیح ہے۔ مسلسل برفباری اور گاڑیوں میں ہیٹر چلنے کی وجہ سے سانس اور پھیپھڑوں کی بیماری میں مبتلا شہریوں کو ریسکیو کی مدد سے فوری فرسٹ ایڈ دی جا رہی ہیں۔

مری میں داخلے کے راستے بند کر دیئے گئے ہیں، نتھیا گلی سے مری داخلے پر ایس او پیز لاگو کر دیئے گئے ہیں۔ روکنے کرنے کے باوجود مری کا رخ کرنے والے شہریوں کو واپس بھیجا جا رہا ہے۔ تمام انٹری پوائنٹس پر سیاحوں کو روکنے کیلئے خصوصی پکٹس قائم کردیئے گئے ہیں۔ آگاہی اعلانات کے باوجود بڑی تعداد میں سیاح مری کے داخلی راستوں پر موجود ہیں۔

متعلقہ خبریں