جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

کراچی : امن امان سے متعلق اجلاس، ٹارگیٹڈ آپریشن، اسٹریٹ کرائم کی سزاؤں پر قانون سازی کا فیصلہ

اسٹریٹ کرائم کی

کراچی : وزیر اعلیٰ سندھ کے زیر صدارت اجلاس میں شہر میں اسٹریٹ کرائم کے خاتمے کے حوالے سے ٹارگیٹڈ آپریشن، کرمنلز کی ڈیٹا بیس، اسٹریٹ کرائم کی سزاؤں پر قانون سازی اور سمری کورٹ بنانے کا فیصلہ کیا گیا۔

وزیر اعلیٰ سندھ کی زیر صدارات امن امان سے متعلق اہم اجلاس ہوا۔ اجلاس میں ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن نے پولیس کی شہر میں کارکردگی پر بریفنگ دی۔

ایڈیشنل آئی جی نے بتایا کہ فور وہیکل کی اسنیچنگ 2013 کے مقابلے میں 78 فیصد، ٹو ویل وہیکل کی 2013 کے مقابلے میں 73 فیصد، موبائل فون کی اسنیچنگ میں 2015 کے مقابلے میں 29 فیصد کمی آئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : کراچی : اسٹریٹ کرائم میں ملوث ملزم اور ایک اغواء کار گرفتار، رینجرز کا سرچ آپریشن

غلام نبی میمن نے کہا کہ اسٹریٹ کرائم کے اسباب نشے کا عادی، بیروزگاری، طویل مجرمانہ طریقہ کار ہیں۔

اجلاس میں اسٹریٹ کرمنلز کے خلاف مختلف قسم کے ٹارگیٹڈ آپریشن، کرمنلز کی ڈیٹا بیس اور اسٹریٹ کرائم کی سزاؤں میں قانون سازی کے تحت مزید سختی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اسٹریٹ کرائم کے مقدمات کی سماعت کیلئے سمری کورٹ بنانے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔ سمری کورٹ بنانے کیلئے مشیر قانون مرتضیٰ وہاب اور آئی جی پولیس پر مشتمل کمیٹی قائم کردی گئی۔

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ مجھے ہر صورت اسٹریٹ کرائم سے نجات چاہئے۔ جب تک اسٹریٹ کرمنلز کو سزا نہیں ہوگی مسئلہ حل نہیں ہوگا۔

اجلاس میں آئی جی پولیس ڈاکٹر کلیم امام، پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو، سیکریٹری داخلہ قاضی کبیر، ایڈیشنل آئی جی پولیس غلام نبی میمن اور دیگر متعلقہ افسران شریک ہوئے۔

متعلقہ خبریں