جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

سلنڈر نہیں پھٹا، شارٹ سرکٹ سے آگ لگی : عینی شاہدین

سلنڈر تیزگام ایکسپریس

رحیم یار خان : عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ کوئی سلنڈر نہیں پھٹا، شارٹ سرکٹ سے تیزگام ایکسپریس میں آگ لگی۔ ٹرینوں کے کچن میں سلنڈر استعمال ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔

عینی شاہدین نے میڈیا کو بتایا کہ رات سے ہی بوگی نمبر 12 میں جلنے کی بو آ رہی تھی، سپارک سے متعلق انتظامیہ کو آگاہ کیا، لیکن کچھ نہ کیا گیا، چلتی ٹرین سے چھلانگیں لگا کر جان بچائی۔

دوسری طرف ریلوے کی تمام ٹرینوں کی ڈائننگ کاروں میں گیس سلنڈر ہی استعمال ہورہے ہیں، جو خوفناک حادثے کا باعث بن سکتے ہیں۔

رحیم یار خان میں افسوس ناک واقعہ کی ابتدائی اطلاعات کے مطابق مسافروں کا گیس سلنڈر پھٹنے سے آگ لگی۔

یہ بھی پڑھیں : تیزگام ایکسپریس میں آتشزدگی کے باعث 74 سے زائد افراد جاں بحق

ریلوے قانون کے مطابق ٹرین میں گیس سلنڈر اور دیگر ممنوع آتش گیر مادہ ساتھ لے جانا منع ہے اور ریلوے پولیس کی ذمہ داری ہے کہ اگر کوئی مسافر ممنوع اشیاء لیکر سوار ہوتا ہے تو اسے روکا جائے۔

ذرائع کے مطابق ریلوے کی ٹرینوں اور تمام پارلر کار بوگیوں کے کچن کیبن میں گیس سلنڈر ہی استعمال ہورہے ہیں۔

متعدد مرتبہ ٹرینوں میں سلنڈر کی بجائے الیکٹرک سسٹم اوون استعمال کرنے کی تجویز پیش کی گئی، لیکن اس پر عملدرآمد نہیں ہوسکا ہے۔

کراچی، کوئٹہ، پشاور، راولپنڈی اور دیگر طویل روٹس پر چلنے والی ٹرینوں کے کچن کیبن میں ٹھیکے داروں کی جانب سے سلنڈر ہی استعمال کیا جاتا ہے۔

واضح رہے کہ کراچی سے لاہور جانے والی تیزگام ایکسپریس کی تین بوگیوں میں آگ لگنے سے 65 سے زائد افراد جاں بحق، متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

کراچی سے لاہور جانے والی بدقسمت تیزگام ایکسپریس رحیم یار خان اسٹیشن سے روانگی کے چند منٹ بعد ہی شعلوں کی لپیٹ میں آگئی۔

آگ نے ایک کے بعد دوسری اور تیسری بوگی کو بھی لپیٹ میں لے لیا، آگ لگنے کے بعد ٹرین ایک سے ڈیڑھ کلو میٹر تک چلتی رہی۔ عینی شاہدین کے مطابق آگ اتنی شدید تھی کہ مسافروں نے چلتی ٹرین سے چھلانگ لگادی۔

الم ناک حادثے کے فوری بعد ترجمان ریلوے قرۃ العین نے جی نیوز سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ اطلاع ملتے ہی فائربرگیڈ کی ٹیمیں روانہ کی گئیں۔ تیزی سے پھیلتی آگ سے زخمی افراد کو قریبی اسپتالوں میں منتقل کیا گیا ہے، جبکہ رحیم یار خان کے شیخ زید اسپتال سے ڈاکٹرز کی خصوصی ٹیم بھی لیاقت پور پہنچ گئی۔

وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے حادثے پر گہرے رنج اور غم کا اظہار کرتے ہوئے ہلاکتوں کی تصدیق کی۔ جی نیوز سے گفتگو ان کا کہنا تھا کہ آگ اکانومی کلاس کی بوگیوں میں اس وقت لگی جب تبلیغی جماعت کے دو گروپ گیس سلنڈر پر ناشتہ بنانے کی کوشش کررہے تھے، تبلیغی جماعت سے بات کرنی پڑے گی کہ ٹرینوں میں راشن پانی ساتھ لے کر نہ چلیں اور پابندیوں پر اطلاق لازمی بنائیں۔

متعلقہ خبریں