جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

پاکستان اور تاجکستان کے درمیان مذاکرات، مختلف امور پر تبادلہ خیال

پاکستان اور تاجکستان

اسلام آباد : پاکستان اور تاجکستان کے درمیان مذاکرات ہوئے، جس میں مختلف شعبہ جات میں دو طرفہ تعاون سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے تاجکستان کے وزارتِ خارجہ کا دورہ کیا، جہاں سیکریٹری خارجہ سہیل محمود اور تاجکستان میں پاکستان کے سفیر عمران حیدر اور پاکستانی سفارت خانے کے سینیئر حکام وزیر خارجہ کے ہمراہ تھے۔

تاجکستان کے وزیر خارجہ سراج الدین مُہرالدین نے وفد کا پر تپاک خیر مقدم کیا۔ وزیر خارجہ نے نویں ہارٹ آف ایشیاء استنبول پراسس کانفرنس کی کامیاب میزبانی اور بہترین انتظامات پر تاجک وزیر خارجہ کو مبارکباد دی۔

وزارتِ خارجہ تاجکستان میں پاکستان اور تاجکستان کے مابین وفود کی سطح پر مذاکرات ہوئے۔ ان مذاکرات میں دو طرفہ تعلقات، مختلف شعبہ جات میں دو طرفہ تعاون کے فروغ سمیت باہمی دلچسپی کے مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں : ڈاکٹر عدنان، مریم نواز کے علاج اور دیکھ بھال کیلئے لندن سے لاہور پہنچ گئے

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان اور تاجکستان کے مابین گہرے برادرانہ تعلقات ہیں۔ پاکستان اور تاجکستان کے مابین دو طرفہ تعلقات، یکساں مذہبی، ثقافتی و تہذیبی اقدار کی بنیاد پر استوار ہیں۔

دونوں وزرائے خارجہ نے دو طرفہ تعلقات کی نوعیت پر اظہار اطمینان کرتے ہوئے اسے مزید مستحکم بنانے کے عزم کا اعادہ کیا۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان اور تَاجکستان کے مابین دو طرفہ تجارت کے فروغ کے حوالے سے بہت سے مواقع میسر ہیں، جن سے مستفید ہونے کی ضرورت ہے۔ پاکستان، تَاجکستان کو گوادر پورٹ کی صورت میں، جنوب مشرقی ایشیاء، مشرق وسطیٰ، اور افریقہ تک رسائی کا مختصر راستہ فراہم کرتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ بندرگاہیں دونوں ممالک کے مابین دو طرفہ تجارتی حجم میں اضافے کیلئے معاون ثابت ہو سکتی ہیں۔

دونوں وزرائے خارجہ نے مشترکہ وزارتی کمیشن اور مشترکہ ورکنگ گروپس جیسے "ادارہ جاتی میکانزم” کو مزید مضبوط اور فعال بنانے کی ضرورت پر زور دیا۔

متعلقہ خبریں