الیکشن کمیشن نے مسلم لیگ ن اور مریم نواز کو نوٹس جاری کردیئے

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کے عہدے کے خلاف تحریک انصاف کی درخواست پر سماعت، الیکشن کمیشن نے مریم نواز اور مسلم لیگ ن کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 17جون تک ملتوی کردی.

 مریم نواز کی پارٹی نائب صدر کے عہدے کے خلاف دارخواست پر سماعت چیف الیکشن کمشنر سردار محمد رضا کی سربراہی میں تین رکنی کمیشن نےکی، پی ٹی آئی وکیل حسن مان نے کہا کہ درخواست پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کے خلاف دائر کی گئی ہے۔

مریم نواز کا3 مئی 2019 کوبطورنائب صدر کے عہدے کا تقرر کیا گیا، جس پرچیف الیکشن کمشنر نے استفسار کیا اس کو تقرر کہیں گے یا عہدے پر منتخب ہوئیں، تحریک انصاف کے وکیل نے کہا کہ اس عہدے کے لئے انٹرا پارٹی انتخابات نہیں کرائے گئ۔

تحریک انصاف کے وکیل نے کمیشن کو بتایا کہ نیب کورٹ نمبر ون نے مریم نواز کو سات سال کی سزا اور 2 ملین پاؤنڈ جرمانہ عائد کیا ہے۔ جبکہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے سزا معطل کی ہے، سپریم کورٹ کا فیصلہ ہے کہ سزایافتہ شخص پبلک آفس نہیں رکھ سکتا،مریم نواز نائب صدر کا عہدہ رکھنے کی اہل نہیں ہیں۔

الیکشن کمیشن کے باہر مریم نواز کیخلاف درخواست گزار پارلیمانی سیکرٹری بیرسٹر ملیکہ بخاری نے گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ ہمارا پہلے دن سے موقف ہے کہ مریم نواز کا عہدہ رکھنا جمہوری نظام کی نفی ہے۔