جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

عالمی مارکیٹ اور روپے کی قدر میں کمی پیٹرول کی قیمت میں اضافے کی وجہ قرار

روپے کی قدر میں

اسلام آباد : ترجمان وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں اضافے اور روپے کی قدر میں گراوٹ کی وجہ سے قیمتوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔

ترجمان وزارت خزانہ کے مطابق حکومت نے آج تقریبا ”دس روپے انچاس پیسے کے حساب سے پٹرول کی قیمت میں اضافہ کیا جو سوا آٹھ فیصد کے قریب اضافہ ہے۔ گزشتہ پندرہ دنوں میں عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں 10 سے 15 فیصد اضافہ ہوا۔

روپے کی قدر میں بھی مسلسل گراوٹ کی وجہ سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔ حکومت نے اوگرا کی سفارشات پر قیمتیں بڑھائیں۔ حکومت صرف دو روپے پٹرولیم لیوی عوام سے وصول کر رہی ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ میڈیا میں جو اطلاعات آرہی ہیں کہ اوگرا نے پانچ روپے قیمت میں اضافے کی سفارش کی تھی، جبکہ حکومت نے ساڑھے دس روپے کا اضافہ کیا ہے جو بالکل غلط ہے۔

یہ بھی پڑھیں : پیٹرول مہنگا کرنا ثابت کرتا ہے کہ عمران خان ایک عوام دشمن وزیراعظم ہے : بلاول بھٹو

عالمی مارکیٹ میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کو دیکھتے ہوئے حکومت کم سے کم ٹیکس لاگو کر رہی ہے، تاکہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کم سے کم اضافہ ہو۔ حکومت 30 روپے پٹرولیم لیوی کی بجائے 5.62 روپے پٹرولیم لیوی کی مد میں چارج کر رہی ہے۔

وزارت خزانہ کے مطابق حکومت 17 فیصد سیلز ٹیکس کی بجائے اس وقت 6.84 فیصد ٹیکس وصول کر رہی ہے۔ عالمی مارکیٹ میں خام آئل کی قیمتوں اضافے نے پوری دنیا میں بحران پیدا کر دیا ہے۔

حکومت کو پورا احساس ہے کہ موجودہ صورتحال میں اپنے عوام کو کس طریقے سے محفوظ کرنا ہے اور کم سے کم اضافہ عوام کو منتقل کیا جائے۔ پاکستان میں بنگلہ دیش، سری لنکا، انڈیا سمیت خطے کے دیگر ممالک کے مقابلے میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں سب سے کم ہیں۔

مستقبل میں بھی حکومت کی یہی کوشش ہوگی کہ عالمی مارکیٹ میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ہوتا ہے تو کم سے کم اضافہ عوام کو منتقل کیا جائے۔

متعلقہ خبریں