جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

حکومت آئین کو ایک آرڈیننس کے ذریعے بدلنا چاہتی ہے : شاہد خاقان عباسی

حکومت آئین کو ایک

اسلام آباد : شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ وکلاء کی ہڑتال کا معاملہ حل کرنے کی ضرورت ہے، حکومت آئین کو ایک آرڈیننس کے ذریعے بدلنا چاہتی ہے۔

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد میں عدالتی نظام مفلوج ہے، صرف یہاں نہیں، لگتا ہے پورے پاکستان میں مفلوج ہے۔

انہوں نے کہا کہ ڈسکہ میں جو ہوا، وہ سب آپ کے سامنے ہے۔ آج وزیراعظم اور وزیر اعلیٰ کٹہرے میں کھڑے ہوئے ہیں۔ یہ ملک کی بدنصیبی ہے، جس حالت میں ہم نے اس کو کردیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : بد ترین بھونڈے طریقے سے ووٹ چوری کرنے کی کوشش کی گئی : شاہد خاقان عباسی

ان کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں وکلاء کی ہڑتال کا معاملہ حل کرنے کی ضرورت ہے۔ وکلاء کے چیمبرز نہیں گرائے جانے چاہیے تھیں، چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ کے ساتھ زیادتی کا دفاع بھی نہیں ہو سکتا۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ان عدالتوں میں 10 وفاقی وزراء، کم از کم تین وزراء اعظم کے کیس ہیں۔ ان مقدمات کی حقیقت کا کسی کو معلوم ہی نہیں ہے۔ آئین کو بدلنا صرف پارلیمان کا اختیار ہے، حکومت آئین کو ایک آرڈیننس کے ذریعے بدلنا چاہتی ہے۔

سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ہر آدمی موجودہ حکومت سے تنگ ہے۔ اس حکومت نے پاکستان کو تاریخی مہنگائی دی، غربت میں دھکیل دیا۔ لوگ اس حکومت کے ساتھ نہیں چلنا چاہتے۔

متعلقہ خبریں