جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

قومی اسمبلی اجلاس میں مختلف قانونی بلز کثرت رائے سے منظور

بلز

اسلام آباد: قومی اسمبلی کے اجلاس میں مختلف قانونی بلز کثرت رائے سے منظور کرلیے گئے ہیں۔

اجلاس میں پورٹ قاسم اتھارٹی ترمیمی بل 2021، قومی جہاز رانی کارپوریشن ترمیمی بل 2021، قومی اسمبلی میں گوادر پورٹ اتھارٹی ترمیمی بل 2021، بجلی کی پیداوار،ترسیل اور تقسیم کا ترمیمی بل 2021، انسداد زنا بالجبر بل 2020، انتخابات دوسری ترمیم بل 2021 کثرت رائے سے منظور کرلیے گئے۔

وفاقی طبی تدریسی ادارہ جات کے تنظیم نو کا بل 2020، قومی ادارہ صحت تنظیم نوبل 2020، میری ٹائم سیکیورٹی ایجنسی ترمیمی بل 2021، عالمی عدالت انصاف نظرثانی و غور بل 2020 کثرت رائے سے منظور ہوگیا۔ بل کی منظوری سے تمام غیر ملکیوں کو اپیل کا حق مل جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: مالی سال 2021-22 کیلئے وفاقی بجٹ کل پیش کیا جائیگا، ترقیاتی بجٹ 900 ارب مختص کرنے کی تجویز

وزیر قانون فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ کلبھوشن کو قونصلر رسائی (ن) لیگ کے دور میں نہیں دی گئی، عالمی عدالت انصاف نے واضح طور پر اپیل کا قانون لانے کا کہا ہے، اگر بل پاس نہ ہوتا تو بھارت یو این جاتا، بھارت عالمی عدالت انصاف میں توہین کا مقدمہ درج کراتا۔

فروغ نسیم کا کہنا تھا کہ یہ قانون اپوزیشن کو مل کر پاس کرنا چاہیے تھا، اپوزیشن نے بھارتی مقاصد پورے کرنے کی کوشش کی۔

متعلقہ خبریں