جی ٹی وی نیٹ ورک
اہم خبریں

تباہ کن زلزلے کے متاثرین کی امداد، امریکہ اور طالبان منجمد فنڈز کیلئے آج بات چیت کریں گے

تباہ کن زلزلے

واشنگٹن : طالبان تباہ کن زلزلے سے متاثرہ عوام کی مدد کے لیئے منجمد افغان فنڈز جاری کرنے پر امریکہ سے بات چیت کریں گے۔

گزشتہ ہفتے مشرقی افغانستان میں 5.9 شدت کے زلزلے سے ایک ہزار سے زیادہ افراد ہلاک اور دسیوں ہزار بے گھر ہوئے، جس نے امریکہ کو مجبور کیا ہے کہ وہ افغان عوام کی مدد کے لیئے طالبان سے بات چیت کرے۔

امریکہ اور طالبان آج قطر میں تباہ کن زلزلے کے بعد افغانستان کے کچھ ذخائر کو کھولنے پر بات چیت کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

امریکی حکام نے کہا ہے کہ واشنگٹن اس بات کو یقینی بنانے کے طریقے تلاش کر رہا ہے کہ یہ رقم عوام کی مدد کے لیے استعمال کی جائے۔

یہ بھی پڑھیں : پاکستان سے افغانستان کے زلزلہ زدگان کے لئے امدادی سامان روانہ

اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کا کہنا تھا کہ افغانستان کے لیے ایلچی ٹام ویسٹ مذاکرات میں حصہ لیں گے۔ امریکہ کی توجہ انسانی حقوق اور لڑکیوں کے لیے اسکول کھولنے سمیت متعدد مفادات پر مرکوز ہے۔

ترجمان نے واضح کیا کہ ان میں سے کسی بھی مصروفیت کو طالبان یا اس کی نام نہاد حکومت کو قانونی قرار دینے کے طور پر نہیں دیکھا جانا چاہیے بلکہ یہ اس حقیقت کی عکاسی ہے کہ ہمیں امریکی مفادات کو آگے بڑھانے کے لیے اس طرح کے مذاکرات کرنے کی ضرورت ہے۔

طالبان کے اقتدار سنبھالنے کے بعد امریکہ نے افغانستان کے 7 بلین ڈالر کے ذخائر منجمد کر دیئے تھے، جبکہ بین الاقوامی برادری نے اربوں کی براہ راست امداد روک دی تھی، جس پر افغانستان اور اس کی تقریباً 40 ملین آبادی کا انحصار تھا۔

متعلقہ خبریں