جی ٹی وی نیٹ ورک
بریکنگ نیوز

آج عوام کا سمندر جواب دے گا، تین نسلوں کی قربانی دی، خون کے ساتھ انصاف کرنا ہوگا : بلاول بھٹو زرداری

خون کے ساتھ انصاف

لالہ موسیٰ : بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ تین نسلوں سے قربانی دے رہے ہیں، اب فیصلہ کرلیا، ہم نے قربانی دیدی ہے آپ کو ہمارے خون کے ساتھ انصاف کرنا ہوگا۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے لالہ موسیٰ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ پی ڈی ایم کی تحریک کا باقاعدہ آغاز ہورہا ہے، پیپلز پارٹی کے قافلے کی قیادت میں خود کررہا ہوں۔ عمران خان کی سلیکٹڈ حکومت کو گوجرانولہ کی سرزمین سے عوام کی آواز پہنچائیں گے۔ آج تمام پاکستان کے حقیقی نمائندے آج ایک سٹیج پر موجود ہونگے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کی بوکھلاہٹ سب کے سامنے ہے، جو کورونا کے عروج پر لاک ڈاؤن کے مخالف تھے، آج ایس او پیز اور کورونا یاد آگیا۔

وزیراعظم نے اپنی پہلی تقریر میں کہا تھا کہ کنٹینرز دیں گے، کھانا دینگے مگر اس نے راستے روک دیئے۔ آپ عوام کی ناراضگی، جذبات، بھوک افلاس کو قید نہیں کرسکتے۔

ان کا کہنا تھا کہ آپ کو عوام کا سمندر جواب دے گا کہ اس نالائق نے پوری قوم کا جینا حرام کردیا ہے۔ اس نااہل کے جانے کا وقت آچکا ہے، پورے ملک کی عوام کو پی ڈی ایم کا حصہ بننے کا اپیل کرتے ہیں۔ پاکستان جمہوریت ہوگی، پاکستان کی عوام غلام نہیں خود مختار ہے۔ 2020ء میں بھی بھی جمہوریت برداشت نہیں، ایک جلسہ تک برداشت نہیں۔

یہ بھی پڑھیں : پاکستان پاکستانیوں کا ہے، مغربی آقاؤں کا نہیں، انہیں دسمبر نصیب نہیں ہوگا : مولانا فضل الرحمان

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ گلگلت بلتستان کے الیکشن میں بھی پری پول دھاندلی شروع ہوچکی ہے۔ اگر دھاندلی ہوئی تو یہ سب سے بڑا قومی سلامتی کا مسئلہ ہے۔ گلگت بلتستان سی پیک کا گیٹ وے ہے۔ جاوید حسن کو نگر میں الیکشن سے پہلے اس کو نااہل قرار دینے کی کوشش کی جارہی ہے کیونکہ وہ پیپلز پارٹی کا امیدوار ہے۔

بلاول بھٹو زرداری نے مزید کہا کہ میں خود گلگت بلتستان جاؤنگا، اگر دھاندلی ہوئی تو گلگت بلتستان سے اسلام آباد کی جانب احتجاجی مارچ کریں گے۔ جمہوریت کے لئے، انصاف کے لئے ہم تین نسلوں سے قربانی دے رہے ہیں۔ اب ہم نے فیصلہ کرلیا ہے کہ ہم نے قربانی دیدی ہے آپ کو ہمارے خون کے ساتھ انصاف کرنا ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ قائداعظم کے وعدے کو آج تک پورا نہیں کیا جاسکا۔ آج عوام بتائیں گے حکومت کے جانے کا وقت آگیا۔ حکومت کو جمہوری نہیں مانتے اس لیے نکلے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آج بلائے جانے والا قومی اسمبلی اجلاس مذاق ہے۔ وزیراعظم اسی وقت تقریر کرتے ہیں جب اپوزیشن کے ڈیسک خالی ہوں۔ آج بھی شاید وزیر اعظم ایسا ہی کریں گے۔ وزیراعظم نے وعدہ کیا تھا کہ ہر بدھ کو سوالوں کے جواب دینے آؤں گا، عمران خان نے ایک دن بھی اپنا وعدہ پورا نہیں کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ کوشش رہی ملک میں صاف اور شفاف انتخابات ہوں۔ ہم جمہوری لوگ ہیں، ہمارے پاس کوئی بندوق نہیں ہے۔ ہم پارلیمان کو گھر بھیجنے کا سوچ بھی نہیں سکتے۔

متعلقہ خبریں