جی ٹی وی نیٹ ورک
دنیا

مقبوضہ کشمیر : بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں گرفتار پانچ نوجوانوں کی تشدد زدہ لاشیں برآمد

تشدد زدہ لاشیں

سرینگر : مقبوضہ کشمیر میں غیر انسانی کرفیو جاری ہے۔ کشتواڑ سے پانچ نوجوانوں کی تشدد زدہ لاشیں ملی ہیں، جنہیں بھارتی فوج گزشتہ ماہ گرفتار کرکے لے گئی تھی۔

مقبوضہ وادی کو دنیا کی سب سے بڑی جیل بنے ایک سو تریسٹھ دن ہوگئے۔ کشمیریوں کے لئے بھارتی فوج نے ان کے گھروں کو عقوبت خانے بنادیئے ہیں۔

سخت سردی میں بھارتی فوجی کھڑکیوں کے شیشے توڑ دیتے ہیں۔ سری نگر میں آنسو گیس کا شیل گھر میں گرنے سے چھ ماہ کا محمد فاروق جاں بحق ہوگیا۔ پانچ اگست کے بعد آنسو گیس کے باعث دم گھٹنے سے مرنے والے بچوں کی تعداد تین سو سے تجاوز کرگئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : مقبوضہ کشمیر اور ایل او سی کی صورتحال پر سلامتی کونسل کا اہم اجلاس طلب

گرفتار نوجوانوں کی لاشیں ملنے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ کشتواڑ سے گزشتہ ماہ گرفتار کئے گئے بارہ میں سے پانچ نوجوانوں کی تشدد زدہ لاشیں ملی ہیں۔

جعلی مقابلوں میں نوجوانوں کے قتل کو ایمنسٹی نے جنگی جرم قرار دے دیا۔ الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق مقبوضہ وادی میں سترہ سال سے کم عمر قیدیوں کی تعداد سات ہزار سے بھی بڑھ گئی ہے۔

بھارتی فوجی کم عمر بچوں کے ساتھ غلاموں سے بدتر سلوک کرتی ہے۔مقبوضہ وادی میں قتل عام اور لوٹ مار کا بازار گرم ہے۔

ترک خبررساں ادارے کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں سوچے سمجھے منصوبے کے تحت مسلمانوں کا قتل عام کیا جارہا ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کو معاشی لحاظ سے کمزور کرنے کے لئے کاروبار کو بھی تباہ کیا جارہا ہے۔

متعلقہ خبریں