اکبر ایکسپریس ٹرین کے حادثے کے ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ ریلوے ہیڈ کوارٹر حکام کو پیش

لاہور : صادق آباد کے قریبی ریلوے سٹیشن رحیم یار خان پر ہونے والے اکبر ایکسپریس ٹرین کے حادثے کے ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ ریلوے ہیڈ کوارٹر کو پیش کر دی۔

ذرائع کے مطابق صادق آباد میں ٹرین حادثے کی ابتدائی رپورٹ ہیڈ کوارٹر کو ارسال کردی ہے جس میں حادثے کی وجہ کانٹا نہ بدلنا بتائی گئی ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اکبر ایکسپویس اپنی رفتار کے ساتھ آرہی تھی کہ مین لائن اور لوپ لائن کے درمیان بروقت کانٹا نہ بدلنے سے اکبر ایکسپریس مسافر ٹرین اپنی پوری رفتار کے ساتھ لوپ لائن پر پہلے سے کھڑی مال گاڑی سے جا ٹکرائی، جس سے  17 افراد جاں بحق اور 67 افراد زخمی ہو گئے۔

رپورٹ کے مطابق اکبر ایکسپریس کے لئے جائے حادثہ سے پیچھے ٹرین ڈرائیور کو گرین سگنل دیا گیا تھا۔ جس کی روشنی میں اسٹیشن ماسٹر نے کانٹا تبدیل نہ کروایا اور ٹرین کورن تھرو کی اجازت دے دی۔

ذرائع کے مطابق ٹرین حادثے کی تفصیل تفصیلات کے لئے پاکستان ریلویز کے فیڈرل جنرل انسپکٹر اپنی ٹیم کے ہمراہ جائے حادثہ پر پہنچ چکے ہیں۔