جی ٹی وی نیٹ ورک
پاکستان

28 تاریخ کو ہونیوالے انتخابات کو شہری علاقے تسلیم نہیں کریں گے: خالد مقبول

خالد

کراچی: خالد مقبول صدیقی کا کہنا ہے کہ مردم شماری میں سندھ بالخصوص کراچی کی آبادی کو کم دکھایا گیا، 28 تاریخ کو ہونے والے انتخابات کو شہری علاقے تسلیم نہیں کریں گے۔

کنونیئر ایم کیو ایم پاکستان خالد مقبول صدیقی کا کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہنا تھا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف قانون بنایا گیا، سندھ کے شہری، دیہی علاقوں میں سندھ حکومت نے حلقہ بندیاں کیں، حلقہ بندیاں کرنے کا اختیار صرف الیکشن کمیشن کا ہے، یہ حلقہ بندیاں سپریم کورٹ کے فیصلے کے خلاف ہیں۔

خالد مقبول صدیقی کا کہنا تھا کہ ایم کیو ایم کسی الیکشن میں تاخیر کا مطالبہ نہیں کرتی، حلقہ بندیوں میں کراچی، حیدر آباد کو لسانی طور پر تقسیم کیا گیا، حلقہ بندیاں آئین و قانون کی دھجیاں بکھیرنے کے مترادف ہیں، ہم نے ایک بار پھر سپریم کورٹ سے رجوع کیا ہے، حلقہ بندیوں کے معاملے پر الیکشن کمیشن کے پاس بھی گئے، ہم سپریم کورٹ صاف و شفاف الیکشن کے لیے گئے تھے۔

یہ بھی پڑھیں: وزیر اعظم اور خالد مقبول صدیقی کی پارلیمانی سیاسی جماعتوں سے پر امن رہنے کی اپیل

ان کا کہنا تھا کہ سندھ کے شہری علاقوں کا مینڈیٹ سازش کرکے چرایا جارہا ہے، مردم شماری میں سندھ بالخصوص کراچی کی آبادی کو کم دکھایا گیا، مردم شماری سے متعلق ہمارا مقدمہ سپریم کورٹ میں سسک رہا ہے، سپریم کورٹ، ریاست سے درخواست ہے مہاجروں کو صحیح گنا جائے، 28 تاریخ کو ہونے والے انتخابات کو شہری علاقے تسلیم نہیں کریں گے۔

متعلقہ خبریں