جی ٹی وی نیٹ ورک
دنیا

امریکی حکام کو القاعدہ کا افغانستان میں دوبارہ منظم ہونے کا خدشہ

دوبارہ منظم

نیو یارک : امریکی انٹیلی جنس حکام نے القاعدہ کا افغانستان میں دوبارہ منظم ہونے کا خدشہ ظاہر کیا ہے۔

نیویارک ٹائمز کے مطابق انٹیلی جنس حکام نے خبردار کیا ہے کہ القاعدہ ایک سے دو سال کے اندر افغانستان میں دوبارہ منظم ہو سکتی ہے۔ تنظیم کے کچھ ارکان پہلے ہی ملک واپس آ چکے ہیں۔

امریکی حکام کے مطابق طالبان کے پاس افغانستان کی سرحدوں کو کنٹرول کرنے کی محدود صلاحیت ہے۔ اگرچہ طالبان طویل عرصے سے دولت اسلامیہ کی شاخ سے لڑ رہے ہیں مگران کے القاعدہ کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : وزیر اعظم کو روسی صدر کا ٹیلی فون، افغانستان کی صورتحال پر تبادلہ خیال

سنٹرل انٹیلی جنس ایجنسی کے ڈپٹی ڈائریکٹر ڈیوڈ کوہن نے کہا سی آئی اے القاعدہ کی افغانستان میں ممکنہ نقل و حرکت پر کڑی نظر رکھے ہوئے ہے۔

اسی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نیشنل انٹیلی جنس کے ڈائریکٹر ایورل ہینس نے کہا کہ صرف افغانستان ہی نہیں یمن، صومالیہ، شام اور عراق سے بھی امریکا کو خطرات لاحق ہیں۔

متعلقہ خبریں