جی ٹی وی نیٹ ورک
دنیا

ایرانی حملے میں دماغی طور پر متاثر ہونے والے امریکی فوجیوں کی تعداد میں مزید اضافہ

پینٹاگون : ایرانی میزائل حملے میں دماغی طور پر متاثر ہونے والے فوجیوں کی تعداد ایک بار پھر بڑھادی گئی۔ تازہ بیان کے مطابق دماغی مسائل کا شکار امریکی فوجیوں کی تعداد سو سے بھی بڑھ گئی ہے۔

بی بی سی کے مطابق امریکی حکام کا کہنا ہے کہ عراق میں جنوری میں امریکی فوجی اڈے پر ایرانی میزائلوں کے حملوں سے متاثر ہونے والے فوجیوں کی تعداد 100 سے بڑھ گئی ہے۔

حکام کا کہنا ہے کہ یہ فوجی ‘ٹرامیٹک برین انجری’ یعنی شدید دماغی چوٹوں کا شکار ہوئے ہیں، تاہم محکمۂ دفاع کا کہنا ہے کہ ان میں سے 70 فیصد کے قریب علاج کے بعد صحتیاب ہو کر ڈیوٹی پر واپس جا چکے ہیں۔

امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس حملے کے بعد کہا تھا کہ کوئی امریکی فوجی زخمی نہیں ہوا، بعد میں محکمۂ دفاع نے متاثرہ فوجیوں کی تعداد 64 بتائی تھی، جسے اب بڑھا کر 109 کر دیا گیا ہے۔

آٹھ جنوری کو کیا گیا ایرانی حملہ امریکہ کی جانب سے ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کو شہید کئے جانے کے بعد جوابی کارروائی کے طور پر کیا گیا تھا۔

اس حملے سے متاثر ہونے والے فوجیوں کو علاج اور معائنے کے لیے جرمنی بھی لے جایا گیا تھا۔

امریکی محکمۂ دفاع کی جانب سے جنوری میں صحافیوں کو بتایا گیا تھا کہ متاثرین کی تعداد میں اضافے کی وجہ یہ ہے کہ ان چوٹوں کے اثرات ظاہر ہونے میں وقت لگتا ہے۔

متعلقہ خبریں